مکرمی ! گورنمنٹ ہائی سکول میں کچاکھوہ کے چک نمبر 16/9R کے بچوں کو داخل نہیں کیا جارہا۔ہائی سکول کے پرنسپل کا کہنا ہے کہ 16 چک کے بچے اکثر لڑائی جھگڑا کرتے ہیں جس کی وجہ سے سکول میں داخلہ نہیں دیا جائے گا۔اگر یہی لڑائی جھگڑے دیکھتے رہے تو ہمارے معاشرے میں آہستہ آہستہ بگاڑ پیدا ہو جائے گا اکثر ٹیچروں کی پرنسپل کے خلاف شکایات سامنے آئی ہیںجس پر انکے خلاف کوئی ایکشن نہیں لیا گیا۔لڑائی جھگڑے تو بچوں کے بیچ میں چلتے رہتے ہیں لیکن انکو ختم کرنے کے لیے پرنسپل صاحب کو بچوں خود سمجھانا چاہیے۔ سمجھائے کون پرنسپل صاحب تو بذات خود کرسی سے فرصت ملے تب ہی بچوں کو سمجھائیں گے۔ان جھگڑوں کو ہم نے بنیادی وجہ نہیں بنانا چاہیے۔ جو بچے لڑائی جھگڑے کرتے ہیں پرنسپل صاحب کو چاہیے کہ انکے والدین کو بلائیں اور ان سے شکایات کریں۔یہ نہیں کہ ایک جواز بناکر ان بچوں کے لیے تعلیمی اداروں کے دروازے بند کردیں۔ ہم سب کی اعلی حکام سے گزارش ہے کہ وہ اس بات کا نوٹس لیں اور تعلیم جاری رکھنے کے لیے سکول میں بچوں کو داخل کیا جائے۔ (رانا محمد اقرارکچاکھوہ)