مکرمی!ایک کہاوت ہے کہ گیلی مٹی سے خود بخود اینٹیں نہیںبن جاتیں مگر کمہار جو کچھ چاہے گیلی مٹی سے بنا سکتا ہے۔ یہی حال نئی پود کا ہے اور اگر بنیادی اینٹ ٹیڑھی رکھ دی جائے تو آسمان تک دیوار بھی ٹیڑھی بنے گی۔بلاشبہ موجودہ حکومت ترقیاتی کاموں کے جاری ہونے کے باوجود سخت تنقید کے دہانے پہ ہے۔مگر بے جا مخالفین کی مداخلت و تنقید کو نظرانداز کرکے ترقیاتی کاموں کو مُعینہ مدت تک پایہ تکمیل تک پہنچانا اور اپنا ہدف حاصل کرکے آئندہ الیکشن پرواضح برتری کا پیش خیمہ ثابت ہوسکتے ہیں۔سسٹم میں ردوبدل کی جہاں تک بات ہے لاہور میں اشاروں پر کیمرے نصب کر دئیے گئے جن کی خلاف ورزی پر ’’ای چالان‘‘ کا نظام نافذکیا گیا۔ اب ضرورت اس بات کی ہے کہ جہاں اشاروں پر کیمرے نصب ہیں وہاں ٹائمر ڈائون کائونٹنگ بھی لگایا جائے تا کہ اشارہ بند ہونے پر گاڑی کو مناسب بریک مل سکے کیونکہ ٹائمر ڈائون کائونٹنگ ہر گزرنے والے کو تنبیہ کرتا ہے کہ اشارہ بندہونے میں کتنا ٹائم باقی ہے جس کو دیکھتے ہوئے مکمل طور پر پوری ٹریفک کو احسن طریقے سے روکا جا سکتا ہے ورنہ اشارہ کہیں بند نہ ہو جائے میں گزر جائوں اس چکر میں اچانک اشارہ بند ہونے پر مختلف قسم کے حادثات دیکھنے میں آتے ہیں۔ (امتیاز احمد،لاہور)