اسلام آباد (لیڈی رپورٹر) اسلام آباد ہائی کورٹ نے ایف آئی اے اور پی ٹی اے کو سوشل میڈیا میں گستاخانہ مواد اپ لوڈ کرنے والے افراد کا سراغ لگانے اور بوقت ضرورت دیگر ریاستی اداروں کی خدمات حاصل کرنے کا حکم دیا ہے ۔ عدالت عالیہ کے جسٹس عامر فاروق اور جسٹس محسن اختر کیانی پر مشتمل ڈویژن بنچ نے گستاخانہ مواد سے متعلق کیس کے تفصیلی فیصلے میں کہا ہے کہ سوشل میڈیا میں حضور صلی اﷲ علیہ وسلم کی گستاخی کے متعلق اسی نوعیت کی ایک درخواست پر فریقین کوہدایت کی گئی ہے کہ سوشل میڈیا میں کسی بھی قسم کا گستاخانہ مواد کسی صورت اپ لوڈ نہ ہو۔ فاضل بنچ نے کہا کہ یہ فیصلہ جامع اور تمام امور کا احاطہ کرتا ہے ۔ عدالت نے رجسٹرار آفس کو توہین رسالت سے متعلق درخواستوں کے ساتھ منسلک گستاخانہ مواد کو پبلک ریکارڈ کا حصہ نہ بنانے کا بھی حکم دیا ہے ۔