کراچی (این این آئی)سندھ اسمبلی میں قائد حزب اختلاف فردوس شمیم نقوی کوتجاوزات کے خلاف آپریشن سے متاثر ہونے والوں کی فریاد لیکرسپریم کورٹ کراچی رجسٹری پہنچے تو سماعت کے دوران مداخلت کرنے پر عدالت نے ان پر برہمی کا اظہار کیا۔ چیف جسٹس گلزار احمد نے فردوس شمیم نقوی سے استفسار کیا کہ آپ کا کیا مسئلہ ہے ، کون ہیں آپ؟ انہوں نے جواب دیا کہ میں فردوس شمیم نقوی تحریک انصاف سے ہوں، سرکلرریلوے پربات کرنے آیاہوں۔چیف جسٹس نے کہا کہ یہ اسمبلی نہیں ،آپ یہاں بات نہیں کرسکتے ، آپ تو حکومت میں ہیں۔ فردوس شمیم نقوی نے جواب دیا کہ سندھ میں اپوزیشن میں ہیں۔جسٹس سجاد علی شاہ نے کہا آپ اپنی حکومت کے خلاف آگئے ؟ آپ اپنی حکومت کو کیوں نہیں بتاتے ، آپ کی حکومت کا مجموعی طور پر یہی حال ہے ، عدالت میں کچھ اور باہر کچھ اور کہتے ہیں۔سماعت کے دوران فردوس شمیم نقوی نے پھر مداخلت کی۔عدالت نے سرزنش کرتے ہوئے کہا کہ جب آپ الیکشن مہم چلارہے تھے اس وقت کیوں نہیں سوچا؟۔