لندن(آن لائن) برطانوی حکومت کے شدت پسندی کیخلاف کمیشن کی رپورٹ میں انکشاف ہوا ہے کہ سکھوں کی بڑی تعداد بھارتی پالیسیوں سے ناراض ہے ، گولڈن ٹیمپل حملے کے بعد سے خالصتان کی مانگ میں اضافہ ہوا اوراکثریت الگ ملک کا قیام چاہتی ہے ، بھارتی حکومت و میڈیا کا رویہ بھی سکھ علیحدگی پسندی کو ہوا دے رہا ہے جبکہ خالصتان تحریک کے پیچھے پاکستان کا ہاتھ نہیں۔ میڈیا رپورٹس کے مطابق برطانوی حکومت کے شدت پسندی کے خلاف قائم کمیشن کی رپورٹ میں ہوشربا حقائق سامنے آئے ہیں۔ رپورٹ کے مطابق سکھ بھارتی پالیسیوں سے ناراض ہیں بھارت کی جانب سے خالصتان تحریک کو دہشت گرد قراردینے پر سکھ ناراض ہیں۔ برطانیہ میں مقیم ہندوئوں اور سکھوں کے درمیان شدید تنائو پایا جاتا ہے جبکہ اوورسیز کمیونٹی اپنی شناخت سے متعلق زیادہ متحرک ہیں۔ رپورٹ میں غور کیا گیا کہ بیرون ملک سکھ خالصتان کیلئے زیادہ متحرک ہیں،رپورٹ کے مطابق بھارتی حکومت اور میڈیا کی بے رخی اور برا رویہ بھی سکھ علیحدگی پسندی کو ہوا دے رہا ہے ۔