کراچی (کامرس رپورٹر)پاکستان اسٹاک ایکسچینج میں کاروباری ہفتے کے آخری روز جمعہ کوبھی تیزی کا رجحان برقرار رہا اور کے ایس ای 100 انڈیکس 173.93پوائنٹس اضافے سے 34377.61 پوائنٹس کی سطح پر پہنچ گیاجب کہ48.71فیصد حصص کی قیمتوں میں اضافہ ریکارڈ کیا گیا جس سے مارکیٹ کی سر مایہ کاری مالیت میں مزید 8 ارب36کروڑ روپے بڑھ گئے تاہم کاروباری حجم جمعرات کی نسبت 14.59 فیصدکم رہا۔سیاسی افق پر بے یقینی کی کیفیت اور فروخت کے دباؤ کے باعث کاروبار کا آغاز منفی زون میں ہوا ۔ ٹریڈنگ کے دوران ایک موقع پر کے ایس ای100 انڈیکس 34108پوائنٹس کی نچلی سطح پر ریکارڈ کیا گیا تاہم اسٹاک مارکیٹ میں لسٹڈ کمپنوں کے اچھے مالیاتی نتائج کے باعث حکومتی مالیاتی اداروں، مقامی بروکریج ہاؤس سمیت دیگرانسٹی ٹیوشنز کی جانب سے سیمنٹ بینکنگ،ٹیلی کام،توانائی اوردیگرمنافع بخش سیکٹرکی پرکشش سطح پر آئی ہوئی قیمتوں پرخریداری کی گئی، جس کے نتیجے میں مندی کے اثرات زائل ہوگئے اور دوران ٹریڈنگ کے ایس ای100انڈیکس کی 34490 پوائنٹس کی بلندسطح پر بھی دیکھا گیاتاہم اپوزیشن جماعتوں کے لانگ مارچ کے سرمایہ کار گروپوں نے نئی سرمایہ کاری سے گریز کیا، جس کے نتیجے میں کے ایس ای100انڈیکس مذکورہ سطح پر برقرار نہ رہ سکا لیکن تیزی غالب رہی اورمارکیٹ کے اختتام پرکے ایس ای 100 انڈیکس173.93 پوائنٹس اضافے سے 34377.61پوائنٹس پر بند ہوا ۔اسی طرح کے ایس ای 30 انڈیکس106.98 پوائنٹس اضافے سے 16044.69پوائنٹس،کے ایم آئی30 انڈیکس 238.96پوائنٹس اضافے سے 56081.13 پوائنٹس جبکہ کے ایس ای آل شیئر انڈیکس 30.92 پوائنٹس اضافے سے 24729.70پوائنٹس پر بند ہوا ۔ گزشتہ روزمجموعی طور پر349 کمپنیوں کے حصص کا کاروبار ہوا،جن میں سے 170 کمپنیوں کے حصص کے بھاؤمیں اضافہ ،142 کمپنیوں کے حصص کے بھاؤ میں کمی جبکہ37کمپنیوں کے حصص کے بھاؤ میں استحکام رہا۔