اسلام آباد(خصوصی نیوز رپورٹر)وزیراعظم کے مشیر برائے خزانہ ومحصولات ڈاکٹرعبدالحفیظ شیخ نے کہا ہے کہ کے ایس ای 100 انڈیکس میں نومبرکے دوران 14.9 فیصد اضافہ ہوا،مئی 2013ء کے بعد پہلی مرتبہ نومبر میں سٹاک مارکیٹ میں زیادہ تیزی ریکارڈ کی گئی، سٹاک مارکیٹ میں پائیدارتیزی حکومت کی جانب سے اقتصادی استحکام کیلئے اٹھائے جانے والے اقدامات پرسرمایہ کاروں کے بڑھتے اعتمادکامظہرہے ۔یہ بات انہوں نے اپنے ٹویٹ میں کہی ۔ انہوں نے کہاکہ 16 اگست 2019ء کے بعد کے ایس ای 100 انڈیکس میں 10ہزار500 پوائنٹس ( 36 فیصد) اضافہ ہواہے ، گزشتہ ہفتے کے دوران کے ایس ای 100 انڈیکس میں1362 پوائنٹس کااضافہ ہوا اور9 ماہ میں پہلی مرتبہ انڈیکس نے 39 ہزار پوائنٹس کی نفسیاتی حد عبورکی۔علاوہ ازیں وفاقی وزیر برائے اقتصادی امور حماد اظہر نے ایک ٹویٹ میں کہا ہے کہ رواں مالی سال کی پہلی سہ ماہی کا کرنٹ اکائونٹ خسارہ 13 برسوں میں کم ترین ریکارڈ کیا گیا، چار برس کے بعد حسابات جاریہ مثبت ہیں،تین برسوں کے بعد دوسرے ملکوں سے سرمایہ کاری کا سلسلہ بحال ہوا،اسی طرح 19 اگست کے بعد سٹاک مارکیٹ میں 11 ہزار پوائنٹس کا اضافہ ہوا۔انہوں نے کہا کہ پاکستان کو کبھی بھی ایسے اقتصادی بحران کا سامنا نہیں ہوا جو مسلم لیگ نے 2018 میں چھوڑا تھا تاہم ملکی اقتصادی خسارے میں بھی کبھی اس قدر کمی نہیں ہوئی جس طرح تحریک انصاف کے دور حکومت کے پہلے 15 مہینوں میں ہوئی۔