لاہور /شیخوپورہ(سپیشل رپورٹر،ڈسٹرکٹ رپورٹر، مانیٹرنگ ڈیسک) فیصل آباد روڈپر تھانہ بھکھی کی حدود میں دھاگہ ساز فیکٹری کے قریب پولیس وین ٹائر پھٹنے سے الٹ گئی ،سب انسپکٹر سمیت4پولیس اہلکار جاں بحق ہو گئے ،زیر حراست ملزم سمیت5پولیس اہلکار شدید زخمی ہوئے جنہیں ڈی ایچ کیوہسپتالشیخوپورہ منتقل کردیاگیا ،تھانہ گلبرگ پولیس کا سکواڈ لیہ سے ایک اشتہاری مجرم اسلم کو وین میں لیکرلاہور جارہا تھا کہ اچانک اس کا ٹائر پھٹ گیا ،ٹرینی اے ایس آئی اسدالرحمان، ہیڈ کانسٹیبل مجاہد الحسن اور کوثر عباس موقع پر ہی جاں بحق ہوگئے جبکہ سب انسپکٹر غلام مصطفیٰ ہسپتال میں زخموں کی تاب نہ لاتے ہوئے دم توڑ گیا۔دریں اثناء لاہور پولیس کے 4 افسروں اور جوانوں کونمازہ جنازہ کی ادائیگی کے بعد پورے سرکاری اعزاز کے ساتھ سپرد خاک کر دیا گیا ہے ۔ نماز جنازہ میں سی سی پی او لاہور بی اے ناصر، ڈی جی اینٹی کرپشن اعجاز شاہ، ایڈیشنل آئی جی ویلفیئر پنجاب راؤسردار خان، کمشنر لاہور مجتبیٰ پراچہ، ڈی آئی جی آپریشنز لاہور وقاص نذیر، ڈی آئی جی سکیورٹی عمران احمر، رشتہ داروں، تمام ڈویژنل ایس پیز اور اہلکاروں کی بڑی تعداد نے ں شرکت کی۔ پولیس کے دستے نے جاں بحق پولیس افسروں اور جوانوں کو سلامی دی جس کے بعد انہیں متعلقہ قبرستانوں میں سپرد خاک کر دیا گیا۔انسپکٹر جنرل پولیس پنجاب امجد جاوید سلیمی نے شیخوپورہ ٹریفک حادثے پر اظہار افسوس کرتے ہوئے کہا ہے کہ حادثہ میں جاں بحق اہلکاروں نے فرائض کی ادائیگی میں اپنی جانیں قربان کیں، فرض شناس اہلکار محکمہ کا سرمایہ ہیں اور ان کی فیملیز کا مکمل خیال رکھا جائے گا۔آئی جی پنجاب نے سی سی پی او لاہور کو ہدایات جاری کرتے ہوئے کہا کہ جاں بحق اہلکاروں کی فیملیز کا مکمل خیال رکھا جائے اور زخمیوں کو علاج معالجہ کی بہترین سہولیات فراہم کی جائیں۔سی سی پی او لاہور، ڈی آئی جی انویسٹی گیشن وقاص نذیر اور ایس ایس آپریشنز مستنصر فیروز ،سی سی پی او بی اے ناصر نے کہا کہ جان قربان کرنے والوں نے فرض شناسی کی مثال قائم کی۔ جاں بحق افراد کے لواحقین خود کو تنہا نہ سمجھیں۔ متاثرہ خاندانوں کو قانون کے مطابق مالی امداد اور مراعات جلد فراہم کر دی جائیں گی۔دریں اثنا پولیس وین حادثہ میں جاں بحق ہونے والے نواحی گاؤں لمب والی کے سب انسپکٹر غلام مصطفے اور کوثر علی کانسٹیبل آف کوٹ وار کو سرکاری اعزاز کے ساتھ سپرد خاک کر دیا گیا ،نماز جنازہ میں مقامی ایم پی اے چودھری محمود الحق سمیت سینکڑوں افراد نے شرکت کی ،پولیس کے دستے نے گارڈ آف آنر اور سلامی پیش کی ۔