کامونکے (نامہ نگار)مسلم لیگ(ن) کے سیکرٹری جنرل احسن اقبال رحیم یارخان میں پولیس تشدد سے جاں بحق ہونے والے صلاح الدین کے گھر گوجرانوالہ کے علاقے واہنڈو کے نواحی گائوں گورالی پہنچ گئے ، مقتول کے والد ماسٹر افضال کے ساتھ اظہار تعزیت اور فاتحہ خوانی کی،میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے احسن اقبال نے کہا صلاح الدین کے واقعہ نے پورے پاکستان کو ہلا کر رکھ دیا ہے اور یہ ہمارے انتظامی ڈھانچے کے اوپر بہت بڑا سوالیہ نشان ہے ، صلاح الدین کا ذہنی توازن خراب ہونے کی وجہ سے بازو پر نام اور پتہ درج تھا، پولیس کو گھروالوں سے رابطہ کرنا چاہئے تھا۔انہوں نے کہا باوردی خاتون پر تھپڑ مارنے والے شخص نے ایک خاتون کی نہیں بلکہ تمام خواتین کی توہین کی ہے ،خاتون کے اوپر ہاتھ اٹھانے والا بزدل ہوسکتا ہے بہادر نہیں، ہمارے انتظامی ڈھانچے کی نا اہلی کی وجہ سے ایک مظلوم خاتون استعفیٰ پر مجبو ہوگئی ، ہم چیف جسٹس سے مطالبہ کرتے ہیں صلاح الدین اور لیڈی کانسٹیبل فائزہ کے معاملے پر نوٹس لیں،وزیر اعظم اور وزیر خارجہ نے چوڑیاں پہن رکھی ہیں،کشمیر میں کرفیو ختم کرنے کیلئے حکومت کو عالمی دنیا سے رابطہ کرنا چاہئے تھا،ملتان میں پریس کانفرنسز کر کے کشمیر کا مقدمہ نہیں لڑا جاسکتا، دس سال میں اتنی معیشت نہیں گری جتنی موجودہ حکومت نے گرادی،سی پیک روک دیا گیا،پاکستانی قوم کو بند گلی میں دھکیل دیا ، ہم مطالبہ کرتے ہیں کہ 2020 میں نئے انتخابات کرائے جائیں تاکہ ملک ترقی کی راہ پر گامزن ہوسکے ۔