مکرمی! میں آپ کے مؤقر جریدے کی وساطت سے اپنے حلقے سے منتخب صوبائی اسمبلی کے اپوزیشن لیڈرمحمداکرم خان درانی ،ایم این اے زاہداکرم خان درانی، کمشنر بنوں،ڈپٹی کمشنر بنوںسمیت تمام اعلیٰ حکام کی توجہ ایک انتہائی اہم مسئلے کی طرف مبذول کرنا چاہتا ہوں وہ یہ کہ حقیقت سے چشم پوشی کی جاسکتی ہے مگر حقیقت سے انکار نہیں کیا جاسکتا کہ بدقسمتی سے ہمارا ضلع بنوں خصوصاً تعلیمی سفر میں دوسروں کی نسبت تشویشناک حد تک پسماندہ ہے۔ یہاں تک کہ لائبر یری کی سہولت بھی شیریوں کو میسر نہیں میری حکام بلا سے گزارش ہے کہ کوٹکہ میر عالم طور کہ میں لائبریری قائم کی جائے تاکہ اہلیان کوٹکہ میر عالم طور کہ تاریخ، سیاست، ادب وثقافت، روایات کے مطالعے سے اپنے علم میں اضافہ کرکے ایک تعمیری زندگی گزار سکیں گے بصورت دیگر ہمارا نوجوان طبقہ اپنی تاریخ، سیاست ،ادب،ثقافت و روایات اور دیگر دنیا بھر کے حالات و اقعات سے محروم ہوجائے گاکسی نے کیاخوب کہاہے کہ جس معاشرے میں کتب بینی مہنگا سودا بن جائے اور قوم جوتوں پر ہزاروں روپے خرچ کر دے تو اس قوم کو جوتوں کی ہی ضرورت ہوتی ہے۔ ( شہاب سورانی کوٹکہ میرعالم طورکہ بنوں)