اسلام آباد (سپیشل رپورٹر، وقائع نگار خصوصی) پاکستان اور عمان نے اقتصادی و تجارتی تعاون کے فروغ پر اتفاق کیا ہے ۔سلطنت عمان کی مجلس شوری کے چیئرمین خالد بن ہلال ناصر الموالی کی سربراہی میں مجلس شوری کے 10رکنی وفد نے صدر، وزیراعظم اور وزیر خارجہ سے الگ الگ ملاقاتیںکیں۔ صدر عارف علوی کا کہنا تھا کہ بھارت کے نیوکلیئر ہتھیار فاشسٹ قیادت کے ہاتھوں میں ہیں جس سے خطہ کے ساتھ ساتھ پوری دنیا کے امن کو خطرہ ہے ، عمان کو کشمیر کے عوام کیلئے او آئی سی کی حمایت کو تقویت دینے کیلئے کوششیں کرنی چاہئیں۔ادھر عمران خان نے وفد کو مقبوضہ کشمیر میںبھارتی مظالم اورانسانی حقوق کی خلاف ورزیوں سے آگاہ کیا ۔سپیکر قومی اسمبلی بھی اس موقع پر موجود تھے ۔بعد ازاں وفد وزیر خارجہ سے ملا۔ شاہ محمود نے کہا پاکستان اور عمان اقتصادی روابط کے ذریعے دو طرفہ تعاون کو نئی بلندیوں پر لے جا سکتے ہیں ۔ چیئر مین مجلس شوریٰ نے کہاپاکستان عمان کیلئے وسط ایشیائی ریاستوں تک رسائی کیلئے گیٹ وے کی حیثیت رکھتا ہے ۔ وزیر خارجہ نے وفد کو مقبوضہ کشمیر کی تشویشناک صورتحال سے آگاہ کرتے ہوئے کہا کہ نہتے کشمیریوںکی مدد کیلئے بین الاقوامی برادری بالخصوص مسلم دنیا کو مؤثر کردار ادا کرنا ہوگا ۔ عمان کے وفد نے کشمیر کی صورتحال پر تشویش کا اظہار کرتے ہوئے کہا کہ امن کے بغیر ترقی کا خواب شرمندہ تعبیر نہیںہو سکتا ۔ عمان