لاہور(مانیٹرنگ ڈیسک) وفاقی وزیر تعلیم شفقت محمود نے کہا ہے کہ مجھے تو کسی ڈیل کے بارے میں کوئی علم نہیں، ایک چیز کامجھے پتہ ہے کہ کسی بھی قسم کا این آراو عمران خان نہیں دینگے ،میرے بس میں ہو تو جب تک یہ چالیس پچاس ارب روپے واپس نہ کریں، انہیں جانے نہ دوں۔پروگرام ہوکیا رہا ہے میں گفتگو کرتے ہوئے انہوں نے کہا نیب کے قوانین جو درست نہیں ، ان میں ترمیم ہونی چاہئے ، احتجاج کرنا ہرکسی کا جمہوری حق ہے لیکن اگر کوئی ا حتجاج کے لئے سکولوں اورمدارس کے بچوں کو لاتا ہے تواسے پکڑناچاہئے ۔ایک سوال کے جوا ب میں شفقت محمودنے کہا ہماری پارٹی کا یہ منشور تھا کہ ملک میں تعلیم کے جو نصاب چل رہے ہیں، ان سے ملک میں بگاڑ پیدا ہورہا ہے ، ان کو یکساں کرنا ضروری تھا، ہم مارچ تک پانچویں کلاس تک کا یکساں نصاب تیار کر لیں گے اور اکتوبر میں آٹھویں تک تیارہوجائے گا۔تجزیہ کارعارف نظامی نے کہا پی پی والوں نے تو فضل الرحمان کو جھنڈی کرادی ، شہبازشریف جب نوازشریف سے ملے تھے تواس وقت انہوں نے شہبازشریف سے کہا تھاکہ آپ فضل الرحما ن کا لاک ڈائون کا ساتھ دیں، یہ کہا گیا کہ قطر نے نوازشریف کو چھڑانے کی کوشش لیکن مجھے نہیں لگتا البتہ ترک صدر نے عمران خان سے بات کی لیکن حکومت تیار نہیں ہوئی۔ انہوں نے کہا کچھ لوگوں کی سو چ ہے کہ ان ہائوس تبدیلی آئے ، اگر ایم کیوایم ، اختر مینگل اورچودھری برادران کو پیچھے ہٹایا جائے تو ان ہائوس تبدیلی ہوجائے گی،میرا خیال ہے کہ شاہ محمود قریشی کا اپوزیشن سے رابطہ بھی ہے ۔ جناح رفیع فائونڈیشن کے چیئرمین امتیاز رفیع بٹ نے کہا میرے و الدا ور قائداعظم محمد علی جناح کے درمیان رفاقت کے بارے میں مجھے عارف نظامی نے بتایا اورمجھے ان شخصیات پرکام کرنے کا کہا، میں تو اچھا بھلا بزنس مین تھا لیکن اس کے بعد جناح رفیع فائونڈیشن کے قیام کے بعد میں نے اس کوبہت وقت دیا،31سال سے قائداعظم محمد علی جناح کی جدوجہد پر کام کررہاہوں ،یہ قائد کا پاکستان نہیں،اگر ہم آج بھی قائداعظم کے نقش قدم پر چلیں تو یہ قائد کا پاکستان بن سکتاہے ۔