لاہور(سٹاف رپورٹر) امیر جماعت اسلامی سینیٹر سراج الحق نے کہا ہے کہ مسئلہ کشمیر پر 72سال سے حکمران محض بیانات پر اکتفا کررہے ہیں۔آج تک مسئلہ کشمیر ہماری حکومتوں کی نااہلی اور نالائقی کی وجہ سے حل طلب ہے ،موجودہ حکومت نے بھی اب تک آنیاں جانیاں کی ہیں، کوئی عملی قدم نہیں اٹھایا ۔حکمران آخری گولی اور آخری سانس کی بات کرتے ہیں مگر پہلا قدم اٹھانے کو تیار نہیں ،ان کوخوش فہمی ہے کہ ٹرمپ کشمیر پر ثالثی کرے گا۔گزشتہ روز ماڈل ٹاؤن لاہور میں یکجہتی کشمیر کنونشن سے خطاب کرتے ہوئے انہوں نے مزید کہا کہ بھارت کشمیر پر قبضہ کرکے پاکستان کو بنجر بنانا چاہتا ہے ۔اب حکومت کو فیصلہ کرنا ہے کہ ذلت کی موت مرنا ہے یا جرا ت کے ساتھ کشمیریوں کا ساتھ دینا ہے ۔حکمران ٹیپو سلطان کی مثالیں دیتے ہیں مگر ان کے نقش قدم پر چلنے کو تیار نہیں۔قوم چاہتی ہے کہ حکومت جرا ت کے ساتھ کشمیر یوں کا ساتھ دے ۔ہمارا جینا اور مرنا کشمیریوں کے ساتھ ہے ۔ ہمارادشمن ایٹم بم سے نہیں جہاد سے ڈرتا ہے ۔6اکتوبر کو زندہ دلان لاہور لاکھوں کی تعداد میں کشمیر مارچ میں شریک ہوکر اپنے کشمیر ی بھائیوں سے اظہار یکجہتی کریں گے ۔کنونشن سے جماعت اسلامی پنجاب وسطی کے امیر محمد جاوید قصوری اور امیر جماعت اسلامی لاہور ڈاکٹر ذکر اللہ مجاہد نے بھی خطاب کیا ۔اس موقع پر سیکرٹری اطلاعات جماعت اسلامی قیصر شریف اور نائب امیر جماعت اسلامی لاہور ملک شاہد اسلم بھی موجود تھے ۔