راولپنڈی،اسلام آباد (سپیشل رپورٹر،مانیٹرنگ ڈیسک،نیوز ایجنسیاں) بانی پی ٹی آئی عمران خان نے وزیراعظم کی بلائی گئی آل پارٹیز کانفرنس میں شرکت کا فیصلہ کرلیا،پاکستان تحریک انصاف کا وفد آل پارٹیز کانفرنس میں شریک ہوگا،بانی پی ٹی آئی کا کہنا ہے کہ ملک کی خاطر اے پی سی میں شریک ہونگے اور معاملات کو دیکھیں گے اور حکومت کا موقف سنا جائے گا ۔راولپنڈی کی اڈیالہ جیل میں 190ملین پاؤنڈ کیس کی سماعت کے دوران صحافیوں سے گفتگو کرتے ہوئے بانی پی ٹی آئی عمران خان کا کہنا تھا کہ آپریشن سے ملک میں عدم استحکام مزید بڑھے گا۔عزم استحکام آپریشن پر ہمارے تحفظات اپنی جگہ موجود ہیں۔ افغانستان کے ساتھ ہمارا ڈھائی ہزار کلومیٹر کا بارڈر ہے ۔ملک کے معاشی حالات پہلے ہی خراب ہیں ایسی صورتحال میں آپریشن عزم استحکام سے مزید بگاڑپیدا ہوگا۔ہم آل پارٹیز کانفرنس میں آپریشن عزم استحکام کے حوالے سے اپنا موقف پیش کریں گے اور حکومتی موقف کو بھی سنیں گے ۔ دوسری جانب جیل میں ناروا سلوک پر بانی پی ٹی آئی نے بھوک ہڑتال کرنے کا عندیہ دے دیا۔پارٹی سے مشاورت کے بعد بھوک ہڑتال کی کال دوں گا۔گزشتہ روز اڈیالہ جیل میں صحافیوں سے گفتگو کرتے ہوئے عمران خان نے کہاکہ میں بھوک ہڑتال بارے مشاورت کررہا ہوں، اگر مجھے انصاف نہ ملا تو بھوک ہڑتال کردوں گا۔ ایک سال ہونے والا ہے مجھے چکی میں ٹھہرایاہوا ہے سخت گرمی کے باوجود میں اس کی شکایت نہیں کروں گا ۔یہ سمجھتے ہیں اس طرح میری پارٹی کمزور ہوگی لیکن جس پارٹی کاووٹ بینک ہووہ کمزور نہیں ہوتی ہے ۔انہوں نے کہاکہ الیکشن کمیشن نے فراڈ الیکشن کرائے تحقیقات پر چیف الیکشن کمشنر پر آرٹیکل 6 لگے گا۔میری ٹیم گزشتہ روز مجھ سے ملاقات کے لئے آئی تھی،3 گھنٹے تک وہ اڈیالہ جیل کے باہر اور میں اندر ان کا انتظار کرتا رہا ، مجھے اپنی ٹیم سے ملاقات کی اجازت نہیں دی گئی ،اگر ملاقات ہوتی تو میں ان کے اختلافات ختم کروا دیتا،میں جیل سے پارٹی قائدین کو پیغام دے رہا ہوں کہ اپنے اختلافات عوام میں لے کر نہ جائیں ،ملک کے مسائل کا حل صاف شفاف انتخابات میں ہے ، بجلی اور گیس کے بلوں نے عوام کی کمر توڑ دی ہے ۔ صحافی نے سوال کیا عام تاثر ہے کہ آپ کے پارٹی قائدین نے عہدے حاصل کر لیے ، لیکن آپ کو جیل سے باہر نکالنے کے لیے کوئی کوشش نہیں کر رہے ؟بانی پی ٹی آئی نے جواب دیا میرے حوالے سے قومی اسمبلی میں عمر ایوب بڑے تگڑے بولے اور کوشش کی، سینیٹ میں شبلی فراز سمیت علی امین گنڈا پور بڑے تگڑے بولے اور کوشش کی، مذاکرات اور بات چیت کا وقت 8 فروری کو گزر گیا ہے ، ہم شہباز شریف سے مذاکرات کریں گے تو ان کی حکومت چلی جائے گی، فراڈ الیکشن کی تحقیقات ہو جائے تو چیف الیکشن کمشنر پر آرٹیکل 6لگ جائے گا، ایک سال ہونے والا ہے مجھے چکی میں ٹھہرایا ہوا ہے ، سخت گرمی کے باوجود میں اس کی شکایت نہیں کروں گا۔ لاہور(مانیٹرنگ ڈیسک ) وزیر دفاع خواجہ آصف نے کہا ہے کہ لگتا ہے بانی پی ٹی آئی عمران خان کے دل میں کوئی ہمدردانہ گنجائش پیداہورہی ہے ،بانی پی ٹی آئی کا رویہ غیر سیاسی ہے لیکن ان کا موسم تبدیل ہو رہا ہے ۔گزشتہ روز عمران خان کی جانب سے اے پی سی میں شرکت کے اعلان پر رد عمل میں کہا کہ بانی پی ٹی آئی نے آل پارٹیز کانفرنس میں شرکت کرکے ایک اچھا فیصلہ کیا ہے ۔امید ہے کہ مستقبل میں بھی ان کا رویہ مثبت رہے گا۔پی ٹی آئی کو مذاکرات کی حکومتی پیشکش اب بھی برقرار ہے ۔سیاست میں مل بیٹھنے کا راستہ کھلا رکھنا چاہئے ۔خواجہ آصف نے واضح کیا کہ دہشت گردی کے خلاف آپریشن سیاسی نہیں بلکہ یہ قومی معاملہ ہے ۔حکومت خیبرپختونخوا ہ آپریشن عزم استحکام کی حمایت کرے گی۔ وزیراعلیٰ خیبرپختونخوا ہ علی امین گنڈاپور نے ایپکس کمیٹی کے اجلاس میں آپریشن مخالف کوئی بات نہیں کی تھی ان کا طرز عمل اس وقت بھی مثبت تھااب بھی ایسا ہی ہوگا۔وزیر دفاع کا مزید کہنا تھا کہ ملٹری اسٹیبلشمنٹ سے مذاکرات پی ٹی آئی کی خواہش ہے ۔ا سٹیبلشمٹ ہی ہمیشہ پی ٹی آئی کی کفیل رہی ہے ۔ آل پارٹیز کانفرنس کے حوالے سے سوال کے جواب میں وفاقی وزیر اطلاعات عطا اللہ تارڑ نے کہا کہ عزم استحکام آپریشن پر کل جماعتی کانفرنس بلانے کے حوالے سے مشاورت جاری ہے ۔ انہوں نے کہا کہ کل جماعتی کانفرنس کے بارے میں بانی پی ٹی آئی کا بیان بھی سامنے آیا ہے ، اللہ کرے وہ اس پر قائم رہیں، عزم استحکام پورے ملک کا معاملہ ہے ، اس پر تمام سیاسی جماعتوں کو آن بورڈ لیا جانا چاہئے ۔ کل جماعتی کانفرنس میں تمام سیاسی جماعتوں کی شرکت ہونی چاہئے ۔