گلگت(صباح نیوز،این این آئی)چیئر مین پیپلز پارٹی بلاول بھٹو نے کہا ہے کہ کنٹرول لائن پر جوان اور معصوم شہری ہندوستانی بمباری سے شہید ہو رہے ہیں۔ مقبوضہ وادی میں مودی سرکار نے ظلم کی انتہا کر دی ہے ۔آج کشمیرکے مظلوم عوام ہماری طرف دیکھ رہے ہیں، اگرکشمیرکیلئے ایک ہزارسال بھی جنگ لڑناپڑی تو لڑیں گے ۔ گزشتہ روزگلگت بلتستان کے علاقے گانچھے میں جلسے سے خطاب میں بلاول بھٹونے کہا کہ ہم پر سلیکٹڈ وزیراعظم مسلط کیا گیا ہے اسے بین الاقوامی تعلقات، خارجہ پالیسی کا پتہ ہے نہ ملکی مسائل حل کرنیکااندازہ ہے ۔ انہوں نے کہا کہ عمران خان نے ملکی معیشت کو تباہ کردیاہے ، غربت اور مہنگائی میں اضافہ ہورہاہے ۔ ملک مشکل صورتحال سے گزر رہا ہے ، حالات بد سے بدتر ہوتے جا رہے ہیں۔انہوں نے کہا کہ جتناقرضہ پیپلز پارٹی نے پانچ سال میں نہیں لیاتھا عمران خان حکومت نے ایک سال میں اس سے زیادہ لے لیاہے ۔ عوام میری طاقت بنیں گے تو میں خود سارے سلیکٹڈ نکال کے باہر پھینک دوں گا۔انہوں نے کہا کہ وزیراعظم کہتے تھے کہ خود خوشی کر لوں گا، قرض نہیں لوں گا آج اس کے برعکس کیا۔بلاول بھٹو نے بھارتی وزیرِ اعظم سے مخاطب ہوتے ہوئے کہا ہے کہ سنو مودی! تم لیڈر نہیں قاتل ہو، پہلے گجرات کے اب کشمیر کے قاتل بن گئے ہو ، کشمیر سے کرفیو اٹھائو اور قیدیوں کورہا کرو ،کشمیریوں کو جتنی طاقت سے دبائو گے وہ تمہارے خلاف اس سے زیادہ طاقت سے کھڑے ہوں گے ۔ مودی اگرتم جمہوری حکمران ہوتوکشمیرسے کرفیواٹھاکردکھاؤ،کشمیری قیدیوں کورہاکرو۔ انہوں نے کہا کہ آج یہاں آ کر بہت خوشی محسوس کر رہا ہوں، شہید بینظیر بھٹو پہلی وزیراعظم تھیں جو سیاچن پہنچی تھیں۔ بھٹو شہید نے گانچھے کو ضلع کا درجہ دیا، پیپلزپارٹی کے علاوہ کسی نے گلگت بلتستان میں کام نہیں کیا،شہید ذوالفقار بھٹو نے گلگت بلتستان کے لوگوں کوسبسڈی دی تھی۔ پیپلز پارٹی کی حکومت عوامی حکومت تھی۔ میں شہیدوں کا وارث ہوں، میرے بڑوں نے اس ملک اور عوام کیلئے شہادت قبول کی۔ اس ملک کی سلامتی کیلئے جان دینے کیلئے تیار ہیں۔انہوں نے کہا کہ موجودہ حکومت سے ملک کا کوئی بھی طبقہ خوش نہیں،لیڈروہ ہے جو عوام سے کئے وعدے پورے کرے ، حکومت احتساب کے نام پرانتقام لے رہی ہے ،آج بھی ملک کی سلامتی کیلئے جان دینے کو تیار ہیں، ہمارے ملک کوجب بھی دفاع کی ضرورت پڑی گلگت بلتستان کے جوان سب سے آگے رہے ہیں،گلگت بلتستان کے لوگوں نے جمہوریت کیلئے قربانیاں دیں ہیں۔