سرگودھا(خبرنگار) آئندہ سالانہ ترقیاتی پروگرام کا 41فیصد پسماندہ اضلاع میں بنیادی سہولیات کی فراہمی پر خرچ کرنے کا فیصلہ کرلیاگیا۔پانی میں کینسر اور ہیپاٹائٹس جیسے موذی امراض کا سبب بننے والے کیمیائی مادوں کے خاتمے کے لیے منصوبہ جات کو اولین ترجیح دی جائے گی،بوتل کی بجائے نلکوں کے راستے صاف پانی کی ترسیل کو ممکن بنایا جائے گا، جنوبی پنجاب کی 54فیصد آبادی کے پیشے کو مدنظر رکھتے ہوئے سکولوں کے نصاب اور فنی تربیت میں زرعی صنعت سے متعلق پروگرام متعارف کرائے جائیں گے ۔وسائل کی عدم دستیابی کی وجہ سے تعلیم سے محروم رہ جانے والے افراد کو کاروبار کی تربیت دی جائے گی تاکہ وہ خود کفیل ہو کر صوبے کی معاشی ترقی میں اپنا موثر کردار ادا کریں۔