مکرمی !ہم نے پاکستان کا مطالبہ زمین کا ٹکڑا حاصل کرنے کیلئے نہیں کیا تھا،بلکہ ہم ایسی تجربہ گاہ حاصل کرنا چاہتے تھے جہاں ہم اسلام کے اصولوں کو آزما سکیںلیکن آج ہم دیکھتے ہیں کہ ملک میں نام ،اسلام بچوں کا تو ہے مگر اسلام کا عملی اطلاق مفقود ہے۔ اصول کاغذوں میں ایسے دفن ہو کر رہ گئے ہیں کہ اصولوں کی بنیاد پر حاصل کردہ ملک میں کبھی کبھی جنگل کا اصول دکھائی دیتا ہے لیکن ہمیں مایوس نہیں ہونا ہے ہو سکتا ہے کہ اللہ نے موجودہ حکمران کو اصولوں کی پاسداری اور قانون کے عملی اطلاق کیلئے منتخب کر لیا ہو۔ ہو سکتا ہے قائد کے وضع کردہ اصولوں کا عملی اطلاق اس حکومت کے ہاتھوں سرانجام دینا قرار پائیں لیکن یہ سب تب ممکن ہے جب ڈائریکٹر، ڈائریکشن دینے کی بجائے ڈائریکٹ ایکشن سے کام لے گا۔ (مرادعلی شاہد‘ قطر)