لاہور(نیوز رپورٹر، این این آئی) محکمہ اینٹی کرپشن نے لاہور مال روڈ پر واقعہ وفاقی حکومت کی ملکیت 10ارب روپے سے زائد مالیت کی اراضی پر معروف و بڑے ہوٹل کی تعمیر کیخلاف کارروائی شروع کردی، معاملہ کی ابتدائی انکوائری مکمل کر کے ہوٹل انتظامیہ اورملی بھگت میں ملوث ایل ڈی اے افسروں کیخلاف مقدمہ درج کرلیا گیا جبکہ تحقیقات کیلئے تین رکنی کمیٹی بھی تشکیل دیدی گئی۔ذرائع کے مطابق محکمہ اینٹی کرپشن کی جانب سے ایک سورس رپورٹ پر انکوائری کی گئی جس کے مطابق مال روڈ پر جس جگہ پر ہوٹل تعمیر کیا گیا 1947ء ء میں وہ رقبہ گھوپال بہادر داس نامی ہندو کی ملکیت تھاجو تقسیم ہندکے بعد بھارت ہجر ت کر گئے ۔1962ء میں رقبہ کا حق ملکیت وفاقی حکومت کے نام ہوا جسے بعد ازاں ملی بھگت سے ہوٹل میں شامل کر لیا گیا ۔ ہوٹل کی انتظامیہ نے پہلے کسی اور نام سے ہوٹل تعمیر کیا اور اسکے بعد اسکا نام تبدیل کر دیا گیا ۔ اینٹی کرپشن کی سورس رپورٹ کے مطابق ہوٹل کا حق ملکیت تاحال وفاقی حکومت کے نام پر ہے ۔ ذرائع کے مطابق محکمہ اینٹی کرپشن نے رقبہ کی ملکیت سے متعلق دستاویزات اورجواب طلب کیا تھا لیکن ہوٹل انتظامیہ حق ملکیت کے حوالے سے تسلی بخش جواب اور متعلقہ ریکارڈ فراہم نہیں کرسکی ۔ محکمہاینٹی کرپشن نے انکوائری مکمل ہونے کے بعد ہوٹل انتظامیہ اور ایل ڈی اے کے متعلقہ افسروں کیخلاف مقدمہ درج کر لیا ۔ دریں اثناڈائریکٹر اینٹی کرپشن لاہور ریجن محمد اصغر جوئیہ نے تحقیقات کیلئے تین رکنی کمیٹی تشکیل دیدی جس کی سربراہی ڈپٹی ڈائریکٹر میاں صابر کرینگے ۔