لاہور(مانیٹرنگ ڈیسک)وزیراعظم کی معاون خصوصی برائے اطلاعات فردوس عاشق اعوان نے کہا ہے کہ پاکستان بدترین حالات سے نکل کربہتر ی کی جانب گامزن ہے ، ماضی کے حکمرانوں کے پانچ سالہ دورمیں 100کے قریب بند پڑی صنعتیں دوبارہ چلی ہیں۔پروگرام جواب چاہئے میں گفتگو کرتے ہوئے انہوں نے کہا جب سے پاکستان بنا ہے جو اصلاحات ہونی چاہئیں تھی، وہ نہیں ہوئیں ، لنگرخانے اور پناہ گاہیں ریاست مدینہ کی جانب ایک قدم ہے ،جب بھی سرجری ہوتی ہے تو درد تو ہوتاہے لیکن اس کے ثمرات بعد میں آتے ہیں۔ انہوں نے اینکرسے کہا کہ آپ وزیراعظم کی کارکردگی پربات کریں، ان کی ذات پر الزام تو نہ لگائیں،اس کا آپ کو کوئی حق نہیں ۔تجزیہ کار حفیظ اللہ نیازی نے کہا وزیراعظم کی اہلیت کیلئے جو صلاحیت چاہئے ، میراخیال ہے کہ عمران خان اس سے عاری ہیں،ملک میں اس وقت سیاسی عدم استحکام میں اس حکومت کا کوئی قصور نہیں تاہم معاشی بحران کی ذمہ دار موجودہ حکومت ہے ،ان کو طوفان کا ادراک نہیں،ہم یہاں پر پاکستان فتح کررہے تھے اوربھارت کشمیر فتح کررہاتھا جس میں وہ کامیاب رہا،عمرا ن خا ن کی کابینہ مانگے تانگے کی ہے ، ان سب کی سیاسی عمر چھ ماہ یا آٹھ مہینے ہے ۔انہو ں نے کہا میرا اور عمران خان کا ایک ہی خاندان ہے ،ایک ہی خون ہے ،میں کبھی کسی رینٹل سیاسی لیڈرسے نہیں الجھتا ہوں۔تجزیہ کار سلیم صافی نے کہا میں فخر سے کہہ سکتا ہوں کہ تبدیلی لانے میں کوئی کردار نہیں تھا، قصورتو حفیظ اللہ نیازی کا ہے جنہوں نے عمران خان کو سیاست میں متعارف کرایا۔ انہوں نے کہا چین کی آبادی اور پاکستان کی آبادی کے تناسب سے پاکستان میں چین کے مقابلے میں بہت زیادہ لوگ اندرہیں ،کیا چین یا کسی اور ملک کا چیف جسٹس یہ کام کرسکتا ہے جومیاں ثاقب نثار نے کیا، چیئرمین نیب جو آج کررہے ہیں، کیاوہ چین میں کیا جاسکتا ہے ۔ جواب چاہئے