طرابلس(آن لائن)معمر قذافی کے دور میں لیبیا کے آخری وزیراعظم بغدادی علی المحمودی کو سزائے موت سنائے جانے کے چار سال بعد صحت کے مسائل کی وجہ سے جیل سے رہا کر دیا گیا۔ محمودی اس وقت وزیراعظم تھے جب نیٹو کی حمایت سے 2011ء میں ہونیوالی بغاوت میں قذافی کو اقتدار سے معزول کر کے قتل کر دیا گیا تھا۔ انہیں 2014ء میں مظاہرین کیخلاف خون ریز کریک ڈاؤن میں ملوث ہونے پر 8 دیگر اعلیٰ عہدیداروں کیساتھ سزائے موت سنائی گئی تھی جن میں قذافی کا بیٹا سیف الاسلام بھی شامل تھا۔وزارت انصاف نے بتایاکہ محمودی کو میڈیکل کمیشن کی سفارش پر صحت کی وجوہات پر رہا کیا گیا تاکہ ان کا خصوصی طبی مرکز میں علاج کیا جا سکے ، تاہم مزید تفصیلات فراہم نہیں کی گئیں۔