اسلام آباد( خبر نگار خصوصی، وقائع نگار خصوصی، این این آئی) اپوزیشن نے ٹیکس ایمنسٹی سکیم مسترد کرتے ہوئے حکومتی پالیسیوںپر شدید تنقید کی ہے ۔ مسلم لیک ن کے نائب صدر شاہد خاقان عباسی نے مریم اورنگزیب اور دیگر رہنمائوںکے ساتھ پریس کانفرنس میں کہا ن لیگ کی ٹیکس ایمنسٹی سکیم حرام اور عمران خان کی حلال ہے ؟موجودہ حکومت کی کرپشن حلال جبکہ کسی اور کا کام ٹھیک نہ ہونا حرام ہے ؟ جب ہم ایمنسٹی سکیم لائے تو عمران اور اسد عمر نے لعنتیں بھیجیں، ہماری ایمنسٹی سکیم اصلاحاتی پیکیج تھا، ہر سال ایمنسٹی سکیم نہیں لائی جاتی۔ ادھر مریم اورنگزیب نے بیان میںکہا آئی ایم ایف پر خود کشی تو نہ ہوئی، عمران صاحب نے ٹیکس ایمنسٹی پر بھی یوٹرن لے لیا،آپ کو مسلم لیگ ن کی نقل مارنے میں 9ماہ لگے ،عمران نے تحریک انصاف کے پکڑے گئے 18اکائونٹس کو ایمنسٹی دیدی ۔پیپلزپارٹی کی رہنما شیری رحمان نے کہا پہلے کہا جاتا تھا کہ ایمنسٹی سکیم چوروں اور ڈاکوؤں کیلئے ہوتی ہے ، بتایا جائے کہ اب اس سکیم کا فائدہ کس کو ہوگا؟ایمنسٹی سکیم پر صرف اتحادی جماعتوں کو اعتماد میں لیا گیا،حکومت ہر معاملے پر پارلیمنٹ سے بھاگ رہی ہے ، عمران خان اپنے ہی دعوؤں کے برعکس اقدامات کر رہے ہیں، موجودہ حکومت کا حالیہ اقدام منافقت کی بدترین مثال ہے ۔خورشید شاہ نے کہا عمران خان بتائیں اب کون سے چور اور ڈاکوؤں کیلئے سکیم لا رہے ہیں؟ آئی ایم ایف معاہدے کا اعلان پارلیمنٹ میں ہونا چاہیے تھا، سرکاری ملازمین کی تنخواہوں میں 50 فیصد اضافہ کیا جائے ۔ مولا بخش چانڈیو نے کہا آئی ایم ایف کے کہنے پر ہر چیز مہنگی کر کے جیبوں پر ڈاکے ڈالے جا رہے ہیں، عمران خان کے مالی سہولت کاروں کو نوازنے کیلئے ایمنسٹی سکیم دی جا رہی ہے ، موجودہ حکومت کی کارکردگی صرف انتقامی کارروائیوںتک محدود ہے ۔ نفیسہ شاہ نے کہا عمران جس فالودے والے کے اکاؤنٹ پر تنقید کرتے تھے ، آج اسی کو قانونی تحفظ دے رہے ہیں۔