سائوپائولو(نیٹ نیوز)طبی دنیا کی تاریخ میں پہلی بار ایک مردہ خاتون ڈونر سے ملنے والی بچہ دانی یا رحم کی پیوند کاری کرانے والی خاتون نے صحت مند بچی کو جنم دیا ہے ۔برازیل کے شہر ساؤ پاؤلو میں ستمبر 2016 میں بچہ دانی کی پیوندکاری کے انقلابی آپریشن ہوا تھا،اس سے ان ہزاروں خواتین کو فائدہ ہوگا جو مختلف مسائل کی وجہ سے بچوں کو جنم نہیں دے پاتیں۔اس سے قبل اس طرح کے مردہ ڈونرز کے ٹرانسپلانٹ کے 10 کیسز امریکا، چیک ریپبلک اور ترکی میں ہوئے تھے مگر کسی بھی خاتون کے ہاں بچے کی پیدائش نہیں ہوئی۔تاہم برازیلین خاتون اس معاملے میں خوش قسمت ہوئیں جنھوں نے آپریشن کے ذریعے صحت مند بچی کو جنم دیا۔ساؤ پاؤلو یونیورسٹی ہاسپٹل کے ڈاکٹر ڈینی اجزنبرگ نے اس طبی ٹیم کی قیادت کی اور ان کا کہنا تھا کہ اس کامیابی سے ثابت ہوتا ہے کہ یہ تیکنیک قابل عمل ہے اور خواتین کے بانجھ پن کے مسئلے کو حل کرسکتی ہے ۔زندہ ڈونرز کی جانب سے عطیہ کی جانے والی بچہ دانی کی پیوندکاری سے اب تک مجموعی طور پر 39 کیسز میں 11 بچوں کی پیدائش ہوئی۔ماہرین کے تخمینے کے مطابق دنیا بھر میں 10 سے 15 فیصد خواتین کو بانجھ پن کا سامنا ہوتا ہے اور ہر 500 میں سے ایک خاتون کو بچہ دانی کے مسائل درپیش ہوتے ہیں۔برازیلین خاتون کے ہاں بچے کی پیدائش دسمبر 2017 میں ہوئی تھی ۔ مردہ ڈونر