لاہور (نامہ نگارخصوصی،این این آئی ) لاہور ہائیکورٹ نے مریم نواز کا پاسپورٹ واپس کرنے اور نام ای سی ایل سے نکالنے کی درخواست پر نواز شریف کی طبی رپورٹس کو ریکارڈ کا حصہ بنانے کی اجازت دیدی۔ ہائیکورٹ نے قرار دیا ہے کہ نوازشریف کی تیمارداری کرنے کے لیے خونی رشتے دار نواز شریف کے پاس موجود ہیں، جسٹس طارق عباسی اور جسٹس چودھری مشتاق پر مشتمل بنچ نے مریم نواز کی درخواست پر سماعت کی جس میں موقف اختیار کیا کہ مریم نواز کے والد نواز شریف بیمار ہیں مریم اپنے والد کی تیمارداری کے لیے بیرون ملک جانا چاہتی ہے اس قبل مریم نواز اپنی والدہ کو کھو چکی ہیں،عدالت ایک بیرون ملک جانے کی اجازت دے جسٹس طارق عباسی نے ریمارکس دیئے مریم نواز ماں کو خود بستر مرگ پر چھوڑ کر واپس آئی اور کیا وہاں پر نواز شریف کو اٹینڈ کرنیوالا کوئی نہیں ؟ آپ کے خونی رشتے دار وہاں موجود ہیں عدالت نے مزید کہا کہ ہائیکورٹ نے دیگر غریب لوگوں کے کیسز کو بھی سننا ہیں ،لاہور ہائیکورٹ نے مریم نواز کی درخواست پر سماعت فروری کے پہلے ہفتے تک ملتوی کرتے ہوئے وکلاء کو تیاری کی مہلت دے دی۔دریں اثنا این این آئی کے مطابق مریم نواز کی پاسپورٹ واپسی اورایگزٹ کنٹرول لسٹ سے نام نکالنے کی درخواستوں پر وفاقی حکومت نے جواب جمع کرا دیا ۔