لاہور(وقائع نگار) وزیراعلیٰ پنجاب سردار عثمان بزدار نے وزیراعلیٰ آفس کی جامعہ مسجد میں میلادالنبی ؐ پر روح پرور محفل سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ مسائل کے حل کیلئے ریاست مدینہ کے زریں اصولوں پر چلنا ہوگا۔قبل ازیں انہوں نے عوام کو ریلیف دینے کیلئے بڑا اقدام اٹھاتے ہوئے کسانوں کو اپنی اجناس ماڈل بازاروں میں فروخت کرنے کے فیصلے کی منظوری دے دی ۔ فیصلے کے مطابق صوبے کے 32 ماڈل بازاروں میں کسان براہ راست اپنی اجناس فروخت کرسکیں گے ۔ وزیراعلیٰ عثمان بزدار نے کہا کہ پنجاب حکومت کسانوں کو اجناس کی فروخت کیلئے ماڈل بازاروں میں سٹال فراہم کرے گی اور کسانوں سے سٹالز کا کرایہ یا کوئی اور فیس نہیں لی جائے گی۔ وزیراعلیٰ نے صوبے میں زرعی فیئر پرائس شاپس کا دائرہ کار بھی بڑھانے کی ہدایت کرتے ہوئے کہا کہ صارفین کے حقوق کا ہر قیمت پر تحفظ یقینی بنائیں گے اور پرائس کنٹرول میکانزم پر سو فیصد عملدرآمد یقینی بنانے کے لئے آخری حد تک جائیں گے ۔ وزیراعلیٰ نے مصنوعی مہنگائی کے ذمہ داروں کے خلاف بلا تفریق کریک ڈاؤن جاری رکھنے کا حکم دیتے ہوئے کہا کہ ذخیرہ اندوزوں کے خلاف بھی کسی دباؤ کے بغیر کارروائی کی جائے اور انتظامیہ پرائس کنٹرول کیلئے خود میدان میں نکلے کیونکہ دفتروں میں بیٹھ کر عوام کو ریلیف نہیں دیا جا سکتا۔بعدازاں انہوں نے راجن پوراورڈیرہ غازی خان کے قبائلی علاقوں میں فروغ تعلیم کیلئے مثبت اقدام کرتے ہوئے طلبا ء و طالبات کیلئے دانش سکولوں میں کوٹہ مختص کردیا۔انہوں نے بھکر میں تھل یونیورسٹی کے قیام کی اصولی منظوری بھی دے دی ہے اور اس ضمن میں تھل یونیورسٹی بھکر کے قیام کے حوالے سے محکمہ ہائیر ایجوکیشن پنجاب کی سمری منظور کر لی ۔ادھر وزیر اعلیٰ پنجاب سردار عثمان بزدارنے سکھ برادری کوباباگورونانک دیو جی کے 550ویں جنم دن پر مبارکباد دیتے ہوئے کہاکہ باباگورونانک دیو جی کا جنم دن سکھ برادری کا روایتی مذہبی اور خوشیوں بھرا تہوار ہے اور ایک دوسرے کی خوشیوں میں شریک ہونے سے بھائی چارے اور یکجہتی کو فروغ ملتا ہے ۔دوسری طرف انہوں نے راجن پور اور ڈیرہ غازی خان میں جرائم پیشہ عناصر کے خلاف آپریشن کے دوران پولیس اہلکاروں کی شہادت پر دکھ اور افسوس کا اظہار کیا ۔