کراچی(سٹاف رپورٹر)سندھ ہائیکورٹ نے منکوحہ لڑکی کے سہیلی کے ساتھ رہنے کے معاملے پر فیصل صدیقی ایڈووکیٹ کو عدالتی معاون مقرر کردیا ہے ۔ سندھ ہائی کورٹ کے جسٹس اقبال کلہوڑو کی سربراہی میں دو رکنی بینچ نے استفسار کیا کہ مسلم معاشرے میں شادی شدہ لڑکی کسی اجنبی کے ساتھ رہ سکتی ہے ؟ اس پر معاونت کی جائے ۔ عدالت کا کہنا تھا کہ تفتیشی افسر اپنی تفتیش جاری رکھیں۔ درخواست گزار کا کہنا تھا کہ والدین نے محمد رفیق سے زبردستی نکاح کرادیا تاہم والدین کی جانب سے تشدد کے بعد گھر چھوڑ دیا اورسہیلی کے ساتھ رہائش پذیرہوں۔ عدالت نے آئندہ سماعت پر ایڈووکیٹ جنرل اور پراسیکیوٹر جنرل و دیگر کو 12 اکتوبر کیلئے نوٹس جاری کردیئے ۔