واشنگٹن(نیٹ نیوز،مانیٹرنگ ڈیسک)امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ کا کہنا ہے مشرق وسطیٰ میں جانا امریکی تاریخ کا بدترین فیصلہ تھا، مشرق وسطیٰ میں بڑے پیمانے پر تباہی پھیلانے والے ہتھیاروں کی موجودگی کی غلط اطلاعات پر گئے جبکہ وہاں ایسے ہتھیار نہیں تھے ۔سماجی رابطوں کی ویب سائٹ پر جاری پیغام میں امریکی صدرنے کہا امریکہ کو مشرق وسطیٰ میں نہیں جانا چاہیے تھا، امریکا نے مشرق وسطیٰ میں 80کھرب ڈالر خرچ کئے جبکہ ہزاروں امریکی فوجی ہلاک اور زخمی ہوئے ، دوسری طرف کے بھی لاکھوں لوگ مارے گئے ، شام سے اپنے 50 فوجی اہلکاروں کو نکال لیا ، امریکہ نے اپنی تاریخ میں غلط معلومات اور غیر مصدقہ شواہد کی بنا پر جنگیں لڑیں،عراق میں کیمیائی ہتھیاروں کی خبریں غلط تھیں،وہاں کسی قسم کے کیمیائی ہتھیار نہیں تھے ۔ٹرمپ نے کہا یورپ نے جن داعش جنگجوؤں کو واپس لینے سے انکار کر دیا ، ترکی ان پر قابو پائے ، ہم اب اپنے عظیم فوجیوں کو محفوظ طریقے سے گھر واپس لا رہے ہیں، ہماری توجہ اب بڑے مناظر پر ہے اورامریکا پہلے سے کہیں زیادہ عظیم ہے ۔