سرینگر؍ واشنگٹن (نیوز ایجنسیاں)مقبوضہ کشمیر میں بھارتی فوجیوں نے اپنی ریاستی دہشتگردی کی تازہ کارروائی کے دوران پیر کوضلع بڈگام میں ایک اورکشمیری نوجوان کو شہید کردیا۔کشمیر میڈیا سروس کے مطابق فوجیوں نے نوجوان کو ضلع کے علاقے بہرام پورہ چاڈورہ میں محاصرے اور تلاشی کی ایک کارروائی کے دوران شہید کیا ۔علاوہ ازیں ہزاروں افراد شدیدبارشوں، برف باری اورپابندیوں کی پرواہ نہ کرتے ہوئے گزشتہ روز شہید ہونیوالے 3 کشمیری نوجوانوں کی نماز جنازہ میں شرکت کیلئے ضلع پلوامہ کے قصبے ترال میں اکٹھے ہوگئے ۔کشمیرمیڈیاسروس کے مطابق سیر ، مندورہ اور مونگ ہامہ میں آزادی کے حق اور بھارت کے خلاف فلک شگاف نعروں کی گونج میں شہدا کی نماز جنازہ ادا کی گئی ۔ادھر بھارتی فوجیوں نے سرینگر، بڈگام ، کپواڑہ ، بانڈی پورہ ، بارہمولہ ، اسلام آباد، شوپیاں ، پلوامہ ، کولگام اور راجوری کے اضلاع میں جاری تلاشی اور محاصرے کی کارروائیوں کے دوران لوگوں کو تشدد کا نشانہ بنایا اور انہیں گھروں سے باہر کھلے آسمان تلے کھڑے رہنے پر مجبور کردیا۔ فوجیوں نے اسلام آباد ضلع کے علاقے سرنال میں راہگیروں پر بھی تشدد کیا۔ سرینگر جموں شاہراہ بند ہونے کی وجہ سے معمولات زندگی مفلوج ہوکر رہ گئے ۔ دریں اثنا بھارتی فوجیوں نے ضلع بارہمولہ کے علاقے پانزلہ میں ایک پل کے قریب نصب دھماکہ خیزمواد برآمد کرلیا۔فرانس کی حکومت نے ایک بیان میں کہا کہ کشمیر کی صورتحال پر گہری نظر رکھے ہوئے ہیں اور حال ہی میں فرانس کے صدر اور بھارتی وزیر اعظم کے درمیان ٹیلیفونک گفتگو میں اس مسئلے پر تبادلہ خیا ل کیا گیا۔