نیویارک( ندیم منظور سلہری سے ،این این آئی)پاکستان نے اقوام متحدہ میں کشمیر میں جاری بھارتی ظلم و جبر سے ایک بار پھر پردہ اٹھا دیا، ایک ہفتے کے دوران مستقل مندوب ملیحہ لودھی نے تیسری دفعہ جنرل اسمبلی میں کشمیر کے سنگین انسانی المیے کی طرف توجہ دلائی ۔ملیحہ لودھی نے جنرل اسمبلی کی نو آبادیات کے خاتمے پر کام کرنے والی کمیٹی سے خطاب کے دوران کشمیر کے مسئلے پر بھارت پر زبردست اور مدلل وار کرتے ہوئے کہا بھارت کو اقوام متحدہ میں ایک بار پھر منہ کی کھانا پڑی ، بھارتی سرکار منظم انداز میں کشمیریوں پر ظلم کے پہاڑ توڑ رہی ہے ،نوآبادیت کے خاتمے کی بحث کشمیر کا مسئلہ ختم کئے بغیر نامکمل ہے ،کشمیر کے عوام کو انکا حق خودارادیت سلامتی کونسل نے دیا ہے اور حق خودارادیت کا نہ ملنا جہاں غیر قانونی تسلط اور ظلم کو فروغ دیتا ہے وہیں امن و سلامتی کے لیے بھی خطرہ بن جاتا ہے ، کشمیر اقوام متحدہ کے ایجنڈے پر سب سے پرانے تصفیہ طلب مسائل میں سے ایک ہے ۔انہوں نے کہا مودی سرکار کے پانچ اگست کے غیرقانونی اقدام نے مقبوضہ وادی کو دنیا کا بد ترین عقوبت خانہ بنا دیا ہے اوروہاں بھارتی فوج ہزاروں کی تعداد میں بھیجی جا رہی ہے ،بجائے یہ کہ بھارت مظلوم کشمیریوں کو اقوام متحدہ کی قراردادوں کے مطابق حق خودارادیت دیتا،اس نے وہاں کئی دہائیوں سے ظلم کا بازار گرم کر رکھا ہے ،بھارت کا پانچ اگست کا اقدام اقوام متحدہ کی قراردودں کی کھلی خلاف ورزی ہے ۔