راولپنڈی(رپورٹر92نیوز)محکمہ زراعت پنجاب راولپنڈی کے ترجمان کے مطابق مونگ پھلی بارانی علاقوں کی اہم ترین نقد آور فصل ہے ۔ خطہ پوٹھوار میں موسم خریف کی کوئی بھی ایسی فصل نہیں جو مونگ پھلی کے مقابلے میں نقد آمدنی دیتی ہو۔ ترجمان کے مطابق مونگ پھلی کی زیادہ پیداوار کے حصول کے لئے فصل کی دیکھ بھال بہت ضروری ہے ۔ اگست کے مہینے میں بالدار سنڈی مونگ پھلی کی فصل پر حملہ آور ہو کر پیداوار کو خطرناک حد تک نقصان پہنچا سکتی ہے ۔مادہ سنڈی پودوں کی نچلی سطح پر ڈھیریوں کی شکل میں انڈے دیتی ہے ۔ سنڈی کے پروانے کا سر، گردن اور جسم کا نچلا حصہ گہرا زرد ہوتا ہے۔ جبکہ مکمل قد کی سنڈی کا پورا جسم لمبے لمبے مٹیالے رنگ کے بالوں سے ڈھکا ہوتا ہے ۔ پہلی دو حالتوں میں سنڈیاں اکٹھی ایک جگہ پر پتوں کو کھاتی ہیں۔ اس کے بعد پتوں، تنوں اور شاخوں کے نرم حصے کو کھاتی ہیں۔ اس کے شدید حملہ کی صورت میں پودے ٹنڈ منڈ نظر آتے ہیں۔ بالدار سنڈی کے تدارک کے لئے اس کے پروانوں کو روشنی کے پھندے لگا کر تلف کریں اور کھیتوں کو جڑی بوٹیوں سے پاک رکھیں جبکہ کیمیائی تدارک کے لئے زہروں کا استعمال محکمہ زراعت (توسیع) کے مقامی فیلڈ عملہ کے مشورہ سے کریں۔