نیو یارک ( نیٹ نیوز) پاپ گلوکارہ و اداکارہ برٹنی اسپیئرز نے اپنی زندگی پر بنائی جانے والی دستاویزی فلموں کو منافقانہ قرار دیتے ہوئے انہیں اپنی زندگی پر دوسروں کے اختیار سے تشبیہ دی ہے ، برٹنی سپیئرز نے حال ہی میں بی بی سی کی جانب سے جاری کردہ دستاویزی فلم کے بعد انسٹاگرام پوسٹ پر اپنی زندگی پر بنائی جانے والی ڈاکیومینٹریز پر رد عمل دیا، برٹنی سپیئرز نے ڈانس کی ویڈیو شیئر کرتے ہوئے طویل کیپشن میں دستاویزی فلموں پر برہمی اور دکھ کا اظہار کیا، انہوں نے کسی دستاویزی فلم کا نام لیے بغیر لکھا کہ بعض میڈیا کے ادارے دیگر اداروں کے اخلاق پر تنقید کرتے ہیں مگر وہ خود ہی ایسا فعل کرتے ہیں۔دستاویزی فلموں میں دکھانے کے لیے ان کی زندگی کا اور بھی بہت سارا مواد موجود ہے مگر جان بوجھ کر دستاویزی فلموں میں ان کی زندگی کے مشکل حالات دکھا کر کچھ اور ثابت کرنے کی کوشش کی جا رہی ہے ۔بی بی سی نے اپنے وضاحتی بیان میں کہا کہ ان کی دستاویزی فلم میں اداکارہ و گلوکارہ کی زندگی کے حساس مسائل کو سامنے لایا گیا ۔تاہم نیویارک ٹائمز نے اپنی دستاویزی فلم پر کوئی بیان جاری نہیں کیا۔نیویارک ٹائمز نے فروری میں برٹنی سپیئرز کی زندگی پر دستاویزی فلم جاری کی تھی۔اس فلم میں برٹنی کے ذہنی امراض میں مبتلا ہونے کو دکھایا گیا تھا۔