اسلام آباد(وقائع نگار ، مانیٹرنگ ڈیسک) چیئرمین نیب جسٹس (ر)جاوید اقبال نے کہاہے کہ نیب کا کسی گروہ یا سیاسی جماعت سے تعلق نہیں،ہمارا تعلق صرف پاکستان سے ہے ۔ میگا کرپشن کے مقدمات 10 ماہ میں منطقی انجام تک پہنچائیں گے ۔لوٹی گئی اور منی لانڈرنگ کے ذریعے بیرون ملک بھیجی گئی رقوم واپس لائیں گے ۔ ملک میں بدعنوانی ناسور کی صورت اختیار کر چکی جس کا جڑ سے اکھاڑ پھینکنا وقت کی اہم ضرورت ہے ۔ منی لانڈرنگ کی روک تھام کیلئے اقدامات کئے جا رہے ہیں۔ 900 ارب کے بدعنوانی کے 1211 ریفرنسز زیر سماعت ہیں۔نیب نے میگا کرپشن مقدمات کو منطقی انجام تک پہنچانے کیلئے جدید ترین فرانزک لیبارٹری قائم کی ہے ، جس سے دستاویزات کی شناخت، موبائل ڈیٹا اور فنگر پرنٹ کی شناخت کی وجہ سے ٹھوس ثبوت حاصل کرنے میں مدد ملتی ہے ۔ گزشتہ ایک سال کے دوران 503 افراد کو گرفتار جبکہ 440 افراد کے خلاف بدعنوانی کے ریفرنس عدالتوں میں دائر کیے گئے ۔ 1713 شکایات کی جانچ پڑتال، 877 انکوائریوں اور 227 انویسٹی گیشنز کی منظوری دی گئی۔انہوں نے ہدایت کی کہ اشتہاری اور مفرور ملزمان کی گرفتاری کیلئے تمام وسائل بروئے کار لائے جائیں۔