لاہور،اسلام آباد(جنرل رپورٹر،سٹاف رپورٹر،نامہ نگار،نیوز ایجنسیاں) سابق وزیر اعظم اورمسلم لیگ ن کے تاحیات قائد نواز شریف کے علاج کیلئے قائم میڈیکل بورڈ نے ان کے بیرون ملک علاج کی سفارش کردی ہے جبکہ اہلخانہ نے بیرون ملک علاج کیلئے نوازشریف کو رضا مند کرلیا ۔ ذرائع کا کہناہے نوازشریف کے پلیٹ لیٹس میں کمی کی اب تک تشخیص نہیں ہوسکی۔ ادویات اورانجکشن کے باوجود پلیٹ لیٹس کا مسلسل کم رہنا خطرناک اندرونی بیماری کاباعث ہوسکتا ہے ۔ذرائع کے مطابق قانونی پیچیدگیاں دور ہونے کے بعد نوازشریف علاج کیلئے بیرون ملک جائیں گے ۔گزشتہ روز بھی نوازشریف کی طبیعت سنبھل نہ سکی، پلیٹ لیٹس چوبیس ہزار رہ گئے جس پر ڈاکٹر زنے تشویش کا اظہار کیا ہے ۔ سابق وزیر اعظم کا اپنی رہائشگاہ جاتی عمرہ میں قائم انتہائی نگہداشت یونٹ میں علاج معالجہ جاری ہے ،مسلم لیگ (ن) کے صدر شہباز شریف نے جاتی عمرہ میں بڑے بھائی کی عیادت کی۔سابق وزیراعظم کے ذاتی معالج ڈاکٹرعدنان کی سربراہی میں شریف میڈیکل کمپلیکس کے ڈاکٹروں کی ٹیم نے نواز شریف کا مکمل طبی معائنہ کیا ۔مریم نواز اپنے والد کی صحت و علاج معالجہ کی مکمل نگرانی کر رہی ہیں، نواز شریف کی والدہ بیگم شمیم اور داماد کیپٹن (ر) صفدر بھی نوازشریف کے پاس ہیں۔آن لائن کے مطابق نواز شریف نے صبح پھل کا ناشتہ کیا،قائد ن لیگ کے ذاتی معالج ڈاکٹر عدنان کا کہنا ہے نواز شریف کے پلیٹ لیٹس کی صورتحال بہتر نہیں ہوسکی اور ان کی حالت بدستور تشویشناک ہے ۔