لاہور(سٹاف رپورٹر) امیر جماعت اسلامی صوبہ وسطی پنجاب وصدر ملی یکجہتی کونسل وسطی پنجاب محمد جاوید قصوری نے کہا ہے کہ حکومت کی ناقص کارکردگی اور نااہلی سٹیٹ بینک کی تازہ رپورٹ سے ظاہر ہو گئی ہے ، جس میں انکشاف کیا گیا ہے کہ پی ٹی آئی کی گورنمنٹ نے اس سال کے دوران 7ہزار ارب روپے کا ریکارڈ قرضہ حاصل کیا ہے ۔ اگست 2018ء سے اگست 2019ء کے دوران 4ہزار 705ارب روپے مقامی اور 2ہزار 804ارب روپے غیر ملکی قرضہ حاصل کیا گیا ہے ۔ حکمرانوں نے عوام کو شدید مایوس کیا ہے اور ہر محاذ پر ناکامی حکومت کا مقدر بنی ہوئی ہے ۔ ان خیالات کا اظہار انھوں نے گزشتہ روز مختلف پروگرامات سے خطاب کرتے ہوئے کیا۔ انھوں نے کہا کہ ادویات کی قیمتیں مسلسل بڑھتی چلی جارہی ہیں۔ ایک سال کے دوران چوتھی بار قیمتوں میں اضافے اس بات کا ثبوت ہے کہ حکومت کی رٹ عملاً ختم ہوچکی ہے اور پرائس چیک اینڈ کنٹرول کرنے والے ادارے بے بس نظر آتے ہیں۔ میڈیسن کمپنیوں نے شوگر ، بلڈ پریشر، السر کی ادویات 46روپے تک مہنگی کردی گئیں ۔جن سے براہ راست غریب عوام متاثر ہوگی۔ علاج معالجے کی بنیادی سہولیات بھی عوام کی پہنچ سے باہر ہوچکی ہیں۔ انہوں نے کہاکہ وزیر اعظم اور حکومتی وزراء کی ساری توجہ غیر ضرورتی اقدامات اور اپوزیشن کے ساتھ نبرد آزما ہونے پر ہے جبکہ 22کروڑ عوام کو حالات کے رحم و کرم پر چھوڑ دیا گیا ہے ۔