لاہور ( رانا محمد عظیم) نا اہل سابق وزیر اعظم نواز شریف، مریم نواز اور ان کے ساتھ آنے والے دیگر لیگی کارکنوں کیخلاف ایک اور مقدمہ بھی درج ہو سکتا ہے یہ مقدمہ کار سرکار میں مداخلت کرنے اور طیارہ ہائی جیکنگ کا کیس بھی بن سکتا ہے ۔ذرائع کا کہنا ہے کہ نوازشریف اور لیگی کارکنوں نے یہ پلاننگ کر رکھی ہے کہ وہ طیارے سے اسوقت تک باہر نہیں نکلیں گے جبتک اہم لیگی رہنما ،کارکن اور نوازشریف کی والدہ طیارے تک نہیں آ جاتیں۔ ذرائع کا کہنا ہے کہ نوازشریف اور ان کے ساتھی طیارے کے اندر رہ کر مزاحمت کریں گے اور کوشش کریں گے کہ کسی صورت میں نیب یا قانون نافذکرنے والے ادارے نوازشریف کو طیارے کے اندر سے لیکر نہ جا سکیں ۔اس حوالے سے نوازشریف مکمل تیاری کر چکے ہیں اور کچھ عالمی میڈیا کے لوگوں کو بھی اپنے ساتھ لیکر آ رہے ہیں۔ ذرائع کا کہنا ہے کہ اس ضمن میں قانون نافذ کرنے والے اداروں اور متعلقہ ائیر لائن نے بھی اپنا کام مکمل کر لیا ہے ۔ اگر نوازشریف اور ن لیگی کارکن ایسی حرکت کرتے ہیں اور طیارے میں کافی دیر تک قبضہ کر کے اندر ہی بیٹھے رہتے ہیں تو اے ایس ایف اور سول ایوی ایشن اور ایئرلائنز کے انٹرنیشنل رول کے مطابق ان پر مقدمہ درج ہو سکتا ہے اور اس میں جہاں نوازشریف اور مریم نواز شکنجے میں آئیں گے وہاں ساتھ آئے کارکنوں پر بھی مقدمہ درج ہو گا ۔