لاہور( نواز سنگرا)بجٹ 2019-20میں ملک بھر میں اینٹوں کے بھٹوں پر لاہور،اسلام آباد اورراولپنڈی میں سب سے زیادہ 12500روپے ماہانہ ٹیکس عائد کیا گیا ہے ۔بالائی پنجاب اور وسطی پنجاب کے 19اضلاع میں اینٹوں پر 10ہزار روپے ماہانہ جبکہ جنوبی پنجاب اور وسطی پنجاب کے 15اضلاع سمیت سندھ ،خیبر پختونخوا اور بلوچستان میں اینٹوں پر سب سے کم 7ہزار500روپے ٹیکس عائد کیا گیا ہے ۔بجٹ 2019-20میں اینٹوں پر مختلف صوبوں اور اضلاع میں مختلف ٹیکسز عائد کیے گئے ہیں ۔سب سے زیادہ ٹیکس پنجاب کے تین بڑے شہروں اسلام آباد،لاہور اور راولپنڈی میں اینٹوں پر 12ہزار500روپے عائد کیا گیا ہے ۔دوسرے نمبر پربالائی اور وسطی پنجاب کے 19اضلاع ہیں جن میں اینٹوں پر 10ہزار روپے ماہانہ ٹیکس عائد کیا گیا ہے ان اضلاع میں اٹک ،چکوال،جہلم،منڈی بہاؤالدین،سرگودھا،گجرات،سیالکوٹ،نارووال،گوجرانوالہ،حافظ آباد،شیخوپورہ،قصور،ننکانہ صاحب،چنیوٹ،فیصل آباد، جھنگ،ٹوبہ ٹیک سنکھ،اوکاڑہ اور ساہیوال شامل ہیں۔تیسرے نمبر پر پنجاب کے 15اضلاع اور تینوں صوبے جن میں خیبر پختونخوا ،سندھ اور بلوچستان شامل ہیں۔پنجاب کے اضلاع خوشاب،میانوالی،بھکر،لیہ،مظفر گڑھ،ڈیرہ غازیخان،راجن پور، ملتان، لودھراں، خانیوال، وہاڑی، بہاولپور، پاکپتن،بہاولپور،رحیم یار خان شامل ہیں جہاں پر اینٹوں پر 7500روپے ماہانہ ٹیکس عائد کیا گیا ہے ۔