کوئٹہ(این این آئی) پشتونخواملی عوامی پارٹی کے چیئرمین محمود خان اچکزئی نے کہا ہے کہ آزاد عدلیہ ،بہترین افواج ،آزاد میڈیا اور جمہوری طریقے سے منتخب پارلیمنٹ ہی ملک کوبچاسکتی ہے ۔انہوں نے کہا اگر اسلام آباد کے دھرنے میں پیپلز پارٹی اور مسلم لیگ(ن) نے تھوڑاسابھی ساتھ د یا ہوتاتو یہ حکومت وہیں گر جاتی ،عدالتوں نے چھ ماہ کا وقت دیا ہے مارچ ،اپریل میں نئے انتخابات ہوسکتے ہیں اسکے بعد جمہوری طریقے سے عوام کی نمائندہ پارلیمنٹ آرمی ایکٹ میں ترمیم کرسکتی ہے ،پاکستان افغانستان میں جاری 40سالہ جنگ کو تین ماہ میں ختم کرسکتا ہے ، نواز شریف کوتاریخ اس لئے معاف کریگی کیونکہ وہ پنجاب سے تعلق رکھتے ہوئے بھی اپنے تجربے کی بنیاد پر جمہوریت کے لئے کھڑے ہوئے ۔کوئٹہ پریس کلب میں پریس کانفرنس کرتے ہوئے انہوں نے کہا آئین کے تحت بننے والی پارلیمنٹ طاقت کا سرچشمہ ہوتی ہے اسی پارلیمنٹ میں داخلی ،خارجی پالیسیوں کے علاوہ سیاسی جمہوری استحکام کے لئے آگے بڑھنا ہے ، انہوں نے کہا کہ مولانا فضل الرحمٰن کے 15دن کے لاکھوں افراد پر مشتمل دھرنے میں ایک شیشہ نہیں ٹوٹا اس دھرنے کے تمام مطالبات سیاسی تھے اگر اس میں مسلم لیگ (ن) اور پاکستان پیپلز پارٹی صحیح طور پر ساتھ دیتیں تو لاکھوں لوگ باہر نکلتے اور حکومت گھرچلی جاتی۔