امریکہ اور افغان طالبان کے درمیان ہونے والے امن معاہدے کو طالبان اور کابل حکومت کے مابین ہونے چپقلش کی وجہ سے خطرہ ہے کہ کہیں یہ امن معاہدہ ٹوٹ ہی نہ جائے۔ جسکی بنیادی وجہ کابل حکومت کا وہ غصہ ہے کہ اسے امن معاہدے میں کیوں نہیں شامل کیا گیا؟ طالبان نیامریکہ اور اسکی کٹھ پتلی افغان حکومت سے اپنے قیدی رہا نہ کرنے کا شکوہ کیا ہے۔ جس کے باعث طالبان اور کابل انتظامیہ کے درمیان سنگین تناو کی سی کیفیت پیدا ہوگئی ہے۔ مگر ان دونوں فریقین کو یہ بھی سمجھنا چاہیے کہ اگر وہ دونوں یونہی لڑتے رہیں گے تو افغانستان سے امریکی فوجوں کا انخلاء بھی عمل میں نہیں آسکے گا۔ دراصل بھارت اور افغان حکومت کے بعض عناصر اپنا مذموم کھل کر کھیلنے کے چکر میں طالبان اور کابل انتظامیہ کے درمیان باہمی غلط فہمیاں پیدا کرنے کی کوشش میں ہے۔ کیونکہ اسے معلوم ہے کہ اگر یہ دونوں فریق آپس میں مل گئے تو یہاں سے امریکی افواج کے انخلاء کے بعد بھارت کی افغانستا ن میں کوئی پوزیشن نہیں رہ جانی۔ (شہزاد احمد، ملتان)