لاہور(خصوصی نمائندہ)وزیراعلیٰ پنجاب سردار عثمان بزدار نے کہا ہے کہ وزیراعظم عمران خان نے کرونا پر عوام کو ریلیف دیا، مزدور طبقے کو 3 ہزار روپے ماہانہ ملیں گے ، پٹرول اور ڈیزل سستا اورٹیکس کم کرنے سے مہنگائی میں نمایاں کمی ہوگی،پنجاب میں بھی کرونا متاثرین کیلئے امدادی پیکیج دیا جائیگا۔گزشتہ روزوزیراعظم کی طرف سے کرونا پر ایک ہزار ارب روپے سے زائد کے امدادی پیکیج کا خیرمقدم کرتے ہوئے انہوں نے مزید کہا کہ تحریک انصاف کی حکومت حقیقی معنوں میں عوامی حکومت ہے ۔دریں اثنا انسداد کرونا اقدامات کیلئے قائم کابینہ کمیٹی کے اجلاس کے بعد ویڈیو لنک کے ذریعے میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ کرونا وائرس سے متاثرہ مریضوں کیلئے کام کرنیوالے ڈاکٹروں، نرسز، طبی عملے اور دیگر کو ایک تنخواہ کے برابر سپیشل رسک الاؤنس دیا جائیگا۔ جیلوں میں بھی قیدیوں کی سکریننگ کا آغاز کیا جا چکا ہے ، معمولی جرائم میں ملوث 3500 قیدیوں کی رہائی کیلئے سمری بھجوائی جا رہی ہے ، لاہور کیمپ جیل میں قیدیو ں کیلئے 100 بیڈز کا خصوصی ہسپتال بھی قائم کیا گیا ہے ۔ صوبہ بھر میں قرنطینہ سنٹرز کی مجموعی تعداد 163 ہے جہاں مریضو ں کی مجموعی گنجائش 20 ہزار ہے اور مزید قرنطینہ سنٹر بنانے اور طبی سہولتوں کو بڑھانے کا کام تیزی سے جاری ہے ۔حکومت سول ایوی ایشن اتھارٹی کو خط لکھ رہی ہے کہ پنجاب میں بیرون ملک سفر کرکے آنیوالے فضائی عملے اور دیگر سٹاف کے فوری چیک اپ کا بندوبست کیا جائے یا پنجاب حکومت کو انکی سکریننگ کیلئے فہرست فراہم کی جائے ۔ شہروں میں صفائی ،دیگر ضروری امور اورفوڈ چین سپلائی متاثر نہیں ہونے دینگے ، کوئی قلت نہیں تاہم عوام غیر ضروری طور پر اشیا کا سٹاک کرنے سے گریز کریں، انتظامیہ ذخیرہ اندوزی کرنیوالوں کیخلاف سرگرم عمل ہے ۔ کرونا سے بچاؤ کیلئے اپیل ہے کہ شہری سماجی فاصلے برقرار رکھیں اور مخیر حضرات نادار لوگوں کی ضروریات کو پورا کرنے کا اہتمام کریں۔ کرفیو نہیں ہے لیکن شہری گھروں میں رہنے کو ترجیح دیں اور تعاون کریں۔ پنجاب حکومت وفاقی حکومت کی طرز پر سوشل پروٹیکشن پیکیج دیگی۔بعدازاں وزیراعلیٰ نے یونیورسٹی آف انجینئر نگ اینڈ ٹیکنالوجی کالاشاہ کاکو کیمپس کا دورہ کیا اور کرونا مریضوں کیلئے قائم قرنطینہ مراکز کا جائزہ لیا۔ وزیراعلیٰ نے ہدایت کی کہ کرونا مریضوں کا علاج کرنیوالے عملے کا استعمال شدہ لباس تلف کرنے کیلئے ایس او پی پر عمل کیا جائے ،صوبائی وزیر صحت ڈاکٹر یاسمین راشد، کمشنر ، ڈپٹی کمشنر لاہور، محکمہ صحت کے حکام بھی موجود تھے ۔دریں اثناوزیراعلیٰ نے شاہدرہ میں آئل ٹینکر میں آتشزدگی کے واقعہ پر کمشنر اور سی سی پی او لاہور سے رپورٹ طلب کر لی اورتحقیقات کا حکم دیدیا جبکہ ہدایت کی کہ زخمیوں کو علاج کی بہترین سہولتیں فراہم کی جائیں۔وزیراعلیٰ نے گوجرہ میں نوجوان پربہیمانہ تشدد کا سخت نوٹس لیتے ہوئے انسپکٹر جنرل پولیس سے رپورٹ طلب کر لی ہے اور ملزموں کی جلد گرفتاری کا حکم دیدیا ۔وزیراعلیٰ نے پنجاب یونیورسٹی کے سابق وائس چانسلر ڈاکٹر رفیق احمد کے انتقال پر تعزیت کا اظہار کیا ۔