وزیراعظم عمران خان نے کراچی میں تاجروں اور صنعتکاروں کے مختلف وفود سے گفتگو کرتے ہوئے کہا ہے کہ کاروباری برادری پارٹنر بن کر حکومت کے ساتھ کام کرے۔ ہماری اولین ترجیح غربت کا خاتمہ اور معاشی ترقی کے عمل کو تیز کرنا ہے۔ اس سلسلہ میں تاجر اور صنعتکار حکومت کی مدد کریں۔ اس میں کیا شبہ ہے کہ تاجر برادری ملکی معیشت کا اہم حصہ ہے اور معاشی ترقی کی رفتار تیز کرنے کے لئے صنعتکاروں اور تاجروں کا کردار ناگزیر ہے۔ موجودہ حکومت نے منی لانڈرنگ اور بدعنوانی کے خلاف جو اقدامات اٹھائے ہیں تاجر برادری کو اس سلسلہ میں اپنے حصے کا کردار ادا کرنا چاہئے۔ حکومت کو بھی چاہئے کہ وہ ملکی معیشت کے فروغ، برآمدات میں اضافے اور درآمدات کی حوصلہ شکنی کے لئے تاجروںاور صنعتکاروں کو زیادہ سے زیادہ ترغیبات دے اور جہاں ڈیوٹی اور ٹیکسوںمیں کمی کی گنجائش موجود ہے اس سے کاروباری برادری کو مستفید کرے تاکہ ملک میں نئی صنعتیں قائم ہوں اور ملکی برآمدات میں اضافہ ممکن ہو سکے۔ وزیر اعظم کا یہ کہنا بالکل بجا ہے کہ معیشت کو پرانے طریقے سے نہیں چلایا جا سکتا لہٰذاکاروباری برادری کو بھی چاہئے کہ ملک کی تعمیر و ترقی کے لئے اٹھائے گئے حکومتی اقدامات ‘ تجارتی قوانین اور ٹیرف کے مطابق اپنے کاروبار کو فروغ دے اور جو ٹیکس واجب الادا ہے وہ قومی خزانے میں جمع کرائے تاکہ ملکی معیشت مستحکم ہو اور ملک سے بیروزگاری اور مہنگائی کا خاتمہ کرکے غریب عوام کی حالت کو بہتر بنایا جا سکے۔