وزیر اعظم عمران خان نے امیر قطر شیخ تمیم بن حمد الثانی کو مقبوضہ کشمیر کی صورت حال سے آگاہ کرتے ہوئے کہا ہے کہ آر ایس ایس کے نظریات پر چلنے والی مودی حکومت کشمیریوں کے حقوق کو پامال کر رہی ہے۔ دوسری طرف ڈی جی آئی ایس پی آر میجر جنرل بابر افتخار نے بھارت کو متنبہ کرتے ہوئے کہا ہے کہ بھارت نے جنگ چھیڑی تو نتائج تباہ کن ہوں گے۔ اقوام متحدہ کی قرار دادوں کے برعکس مقبوضہ کشمیر کو بھارت میں ضم کرنے کے بعد مودی حکومت شہریت کے ظالمانہ قانون کے ذریعے مسلمانوں کو ملک بدر کرنے کے درپے ہے۔ مودی حکومت کے اس غیر منصفانہ اور متعصبانہ قانون کے خلاف اور مسلمانوں سے اظہار یکجہتی کے لئے پورے ہندوستان میں احتجاج میں مسلسل اضافہ ہو رہا ہے۔ مودی حکومت احتجاج کو دبانے کے لئے دہلی میں مسلمان آبادیوں پر حملوں اور مساجد کی بے حرمتی کرنے والے آر ایس ایس کے غنڈوں کی پشت پناہی کر رہی ہے اس تناظر میں دیکھا جائے تو وزیر اعظم کا یہ کہنا کہ مودی سرکار آر ایس ایس کے ایجنڈے پر عملدرآمد کر رہی مبنی بر انصاف ہے۔ بھارت کشمیریوں کے حق میں آواز بلند کرنے پرپاکستان کی سرحدوں کر اشتعال انگیزی سے بھی باز نہیں آ رہا ان حالات میں عالمی قوتوں بالخصوص اقوام متحدہ کی ذمہ داری بنتی ہے کہ وہ بھارت کے شدت جارحانہ اقدامات کے خلاف مزاحمت کرے اور بھارت میں مسلمانوں کے حقوق کے تحفظ کے لئے مودی حکومت پر دبائو بڑھائے۔ دو جوہری ممالک کے درمیان جنگ کے نہ صرف خطہ بلکہ پوری دنیا پر تباہ کن اثرات مرتب ہوسکتے ہیں۔