اسلام آباد(وقائع نگار ، نیوزایجنسیاں ) تحریک انصاف کی وفاقی حکومت نے 1863 ارب روپے کے مجموعی قومی ترقیاتی پروگرام برائے 2019-20ء کا اجرا کر دیا۔ قومی ترقیاتی پروگرام میں وفاقی سرکاری ترقیاتی پروگرام کیلئے 951 ارب روپے مختص کئے گئے ہیں جن میں 127 ارب روپے کی غیر ملکی معاونت بھی شامل ہے جبکہ وسائل کی کمی کے پیش نظر 250 ارب روپے کا نئے مالیاتی ذرائع سے انتظام کیا جائے گا۔کارپوریشنوں بشمول نیشنل ہائی وے اتھارٹی، این ٹی ڈی سی و پیپکو کیلئے ایک کھرب 97 ارب 75 کروڑ 90 لاکھ، ایرا کیلئے 5 ارب ، وزیراعظم کے یوتھ سکل ڈویلپمنٹ پروگرام کیلئے 10 ارب ، صاف سرسبز پاکستان تحریک و سیاحت کیلئے 2 ارب ، گیس انفراسٹرکچر ڈویلپمنٹ سیس کیلئے ایک ارب روپے مختص کئے گئے ہیں ۔مجموعی وفاقی ترقیاتی پروگرام برائے 2019-20ء کیلئے 9 کھرب 51 ارب روپے مختص کئے گئے جن میں 25 کھرب روپے کا متبادل فنانسنگ ذرائع سے انتظام کیا جائے گا۔ صوبوں کیلئے سالانہ ترقیاتی پروگرام کے تحت 9 کھرب 12 ارب روپے مختص کئے گئے ہیں۔ صوبوں کے سالانہ ترقیاتی پروگرام میں ایک کھرب 12 ارب 44 کروڑ روپے کی غیر ملکی امداد بھی شامل ہوگی۔ نیشنل ہیلتھ سروسز کیلئے 13 ارب 37 کروڑ 65 لاکھ 58 ہزار روپے ، منصوبہ بندی ڈویژن کے لئے 7.963ارب، غربت کے خاتمے اور سوشل سیفٹی کے ترقیاتی منصوبوں کیلئے صرف 20 کروڑ روپے ،پینے کے صاف پانی کی فراہمی کے منصوبوں اور خصوصی ترقیاتی پروگرام کیلئے کوئی رقم مختص نہیں کی گئی۔مور خارجہ ڈویژن کے ترقیاتی منصوبوں کیلئے 2 کروڑ 97 لاکھ، ایوی ایشن ڈویژن کے لئے 1.266ارب، کابینہ ڈویژن کیلئے 39.98ارب ، دفاعی ڈویژن کیلئے 45 کروڑ 60 لاکھ، اسٹیبلشمنٹ ڈویژن کیلئے 33کروڑ32 لاکھ، ہائوسنگ اور ورکس ڈویژن کیلئے 2.93ارب، انسانی حقوق ڈویژن کیلئے 14.29کروڑ ، صنعت و پیداوار کے شعبے کیلئے 2.34ارب روپے مختص کیے گئے ہیں۔ پاکستان نیوکلیئر ریگولیٹری اتھارٹی کیلئے 30کروڑ ، میری ٹائم کی وزارت کے ترقیاتی منصوبوں کیلیے 3.6 ارب روپے مختص کیے گئے ہیں۔