لاہور(قاضی ندیم اقبال)تقریبا 3ماہ کے بعد متروکہ وقف املاک بورڈ میں عدیل احمد نے باضابطہ طور پر کنٹرولر آف اکائونٹس کی ذمہ داریاں سنبھال لیں، بیان حلفی جمع نہ کرانے کی پاداش میں سابق کنٹرول آف اکائونٹس محمد اختر چانڈیو کوتنخواہ و دیگر مراعات کی ادائیگی روک دی گئی۔ ذرائع نے بتایا کہ چیئر مین متروکہ وقف املاک بورڈ کی ہدایت پرخاتون ڈپٹی سیکرٹری رشنا فواد نے سابق کنٹرولر آف اکائونٹس اختر خان چانڈیو کی جانب سے ستمبر2019سے اپریل2020کے دوران 16مدات میں قواعد کے برعکس1کروڑ69لاکھ روپے سے زائد کی نقد ادائیگیاں کرنے کی بابت مالی بے قاعدگیوں کی نشاندہی کی ۔ مالی بے قاعدگیوں اور بے ضابطگیوں کے مرتکب اکائونٹس برانچ کے سربراہ کے خلاف انکوائری اور بورڈ کے فیصلے کے خلاف محمد اختر چانڈیو نے عدالت عالیہ سے رجوع کر کے حکم امتناعی حاصل کر لیا۔ مذکورہ کیس تاحال عدالت عالیہ میں زیر سماعت ہے ۔ محمد اختر چانڈیو کو ڈپٹی سیکرٹری ایڈمن رشنا فواد کی جانب سے مراسلہ جاری کیا گیا جس میں ہدایت کی گئی کہ وہ ادارہ کو ایک بیان حلفی جمع کروائیں کہ اگر عدالت عالیہ لاہور سے ان کے خلاف فیصلہ آیا تو وہ 28مارچ2020سے تاحال وصول تنخواہ سمیت تمام مالی مفاد اور مراعات واپس کرنے کے پابند ہوں گے ۔تاہم محمد اختر چانڈیو نے بیان حلفی جمع نہیں کروایا، جس کے پیش نظر ان کو دی جانے والی تنخواہ کی ادائیگی بند کر دی ہے ۔ذرائع کے مطابق دوسری جانب اکائونٹنٹ جنرل پاکستان ریونیو نے سب آفس لاہور میں کام کرنے والے گریڈ18کے اکائونٹس آفیسرعدیل احمد کوباضابطہ طور پر کنٹرولر آف اکائونٹس تعینات کر دیا گیا ہے جنہوں نے کام شروع کر دیا ہے ۔