مری،لاہور(نمائندہ 92 نیوز ، مانیٹرگ ڈیسک، 92 نیوز رپورٹ ) وزیر اعلیٰ پنجاب مریم نواز اور مسلم لیگ(ن) کے صدر نواز شریف کی زیر صدارت 5گھنٹے طویل خصوصی اجلاس ہوا،جس میں مری ڈویلپمنٹ پلان کی منظوری دی گئی۔ ڈویلپمنٹ، بیوٹی فیکیشن، ٹرانسپورٹ، تعمیر وبحالی کے پراجیکٹس منظور کئے گئے ۔راولپنڈی تا مری ٹورسٹ گلاس ٹرین پراجیکٹ کی منظوری دی گئی۔ ٹورسٹ گلاس ٹرین کے لئے انٹرنیشنل کنسلٹنٹ کی خدمات حاصل کرنے کا فیصلہ کیا گیا۔ مری مال روڈ پر مری کے قدرتی مناظر میں حائل ہائی رائز ہوٹلوں کی عمارتیں ہٹانے کا فیصلہ کیا گیا۔ جی پی او چوک سے ہوٹل متبادل مقام پر منتقل کرنے کی تجویز پر اتفاق کیاگیا۔مری مال روڈ پر قدیم عمارتوں کی یکساں صورت ،سائن اور کلر سلم نافذ کرنے کی ہدایت کی گئی۔ راولپنڈی تا مری ٹورسٹ گلاس ٹرین منصوبے کی تجویز پر اتفاق کیا گیا، مری سمیت ہر شہر ، علاقے ، اور تاریخی علاتوں کے قدیم نام بحال کرنے کا فیصلہ کیا گیا۔مری میں غیر قانونی تعمیرات کی اجازت دینے والے حکام کیخلاف کارروائی کا فیصلہ کیا گیا۔پینے کے پانی کی فراہمی کیلئے قلیل ، اوسط اور طویل مدتی منصوبے پیش کئے گئے ۔مری میں بارشی پانی کو ذخیرہ کرکے گھریلو استعمال میں لانے کے منصوبے کی بھی منظوری دی گئی ہے ۔ مری کے دیہات کی 53 کلومیٹر سٹریٹ میں آر سی سی اور ٹف ٹائل لگائی جائیں گی۔ 1100سے زائد گھروں میں بارشی پانی محفوظ کرنے کے پر اجیکٹ حکومت معاونت کرے گی۔اولڈ راولپنڈی،مری کشمیر روڈ کی تعمیر و توسیع کی منظوری دی گئی۔ اولڈ مری روڈ میں عارضی پارکنگ کی جگہ بھی بنائی جائے گی۔جھیکا گلی چوک کی ری ماڈلنگ،تجاوزات ہٹا کر توسیع اور لارنس کالج روڈ، بوسٹال موڑ تا بروری روڈ کی تعمیر و بحالی کی منظوری دی گئی۔ بانسرہ گلی وائلڈ لائف پارک میں ٹری ہاؤس، کیمپنگ سائٹ،واک ویز، ٹیرس پارکنگ ایریا بنانے کا فیصلہ کیاگیا۔ اجلاس میں نواز شریف نے کہا کہ غیرب آدمی کو تنگ نہ کیا جائے ۔حکومت خود سٹال لگا کر دے ۔