لاہور(سٹاف رپورٹر) امیر جماعت اسلامی سینیٹر سراج الحق نے کہاہے کہ پاکستان کوکسی امریکی گیم کا حصہ نہیں بننا چاہئے ۔ہمارے ہر حکمران نے امریکہ پر اعتماد کیا مگر اس نے ہر بار دھوکہ دیا ۔ امریکہ نے ہمیشہ پاکستان کو مشکل وقت میں اکیلا چھوڑ کر ہمارے لئے مسائل پیدا کرنے کی کوشش کی ، وزیراعظم جانے سے پہلے مشاورت کرتے تو ان کو زیادہ عزت ملتی ۔ ڈاکٹر عافیہ صدیقی کی رہائی کے بغیروزیراعظم کا دورہ امریکہ ناکام رہے گا ۔ افغانستان سے امریکی انخلا اور وہاں پرامن نظام پاکستان کی بھی ضرورت ہے ۔ گزشتہ روزمنصورہ میں جماعت اسلامی لاہور کی لیڈر شپ ٹریننگ ورکشاپ کے شرکائسے خطاب کرتے ہوئے انہوں نے مزید کہا کہ حکومت ایک سال میں ہی ڈھیر ہوگئی اوراسکی ساکھ ختم ہوچکی ہے ،اس وقت پورا نظام صابن پر کھڑا ہے جو کسی وقت بھی زمین بوس ہوسکتاہے ۔سابق حکمران پارٹیوں کے نااہل لوگو ں کو اکٹھا کرکے حکومت بنانے والے جان چکے ہیں کہ یہ ڈلیور کرنے کی صلاحیت نہیں رکھتے اسلئے جلد ہی انکا باب بند ہونے والا ہے ۔ خوف کے عالم میں معیشت ترقی نہیں کر سکتی ۔ حکومت تمام تر کوششوں کے باوجود تاجروں کا اعتماد بحال نہیں کر سکی ۔ حکومت نے سب سے زیادہ بے روزگار نوجوانوں کو مایوس کیاہے ۔ ایک کروڑ نوکریوں کا وعدہ کر کے کسی ایک نوجوان کو نوکری نہیں دی بلکہ پانچ لاکھ سے زائد لوگوں کو روزگار سے محروم کیا۔ کسان اور مزدور کا کوئی پرسان حال نہیں جس کی وجہ سے زراعت اور صنعت زبوں حالی کا شکار ہیں اور مہنگائی نے کاروبار زندگی کو مفلوج کر کے رکھ دیاہے ۔ہماری سیاست اور معیشت یرغمال ہے ، قوم کسی نجات دہندہ کو دیکھ رہی ہے ۔ موجودہ حکمرانوں کے پاس مسائل کا کوئی حل نہیں ۔ حکومت کو لانے والوں کی امیدیں بھی دم توڑ چکی ہیں ۔ ورکشاپ سے امیر جماعت اسلامی لاہو ر ذکر اﷲ مجاہد نے بھی خطاب کیا ۔