اسلام آباد، لاہور (سپیشل رپورٹر، نمائندہ خصوصی سے ، مانیٹرنگ ڈیسک ) وزیراعظم عمران خان نے کہا ہے کہ یمن تنازع کا کوئی فوجی حل نہیں،تمام فریقین بات چیت کی راہ اپنائیں۔ پاکستان تنازع کے سیاسی و پر امن حل کیلئے اپنا کردار ادا کرے گا۔وزیراعظم عمران خان سے یمن کے سفیر مطہرالعشبی نے وزیر اعظم آفس میں ملاقات کی اور پاک یمن تعلقات، مشرق وسطیٰ میں امن وسلامتی کے معاملات پر تبادلہ خیال کیا۔ یمن کے سفیر نے یمنی قیادت کی جانب سے عمران خان کو وزیراعظم منتخب ہونے پر مبارکباد کا پیغام پہنچایا اور حکومت کیلئے نیک خواہشات کا اظہار کیا۔وزیر اعظم عمران خان نے بھی یمن حکمرانوں اور عوام کیلئے نیک جذبات کا اظہار کیا۔ وزیراعظم نے کہا کہ یمن میں امن و استحکام علاقائی امن کیلئے ضروری ہے ۔ یمن تنازع کا پرامن اور قابل قبول حل چاہتے ہیں ۔ پاکستان انسانی ہمدردی کے تحت مدد کیلئے تیارہے ۔ تمام ممالک کو یمن میں قحط زدہ افراد کیلئے انسانی بنیادوں پر امداد کرنی چاہئے ۔انہوں نے عالمی اداروں سے مطالبہ کیاکہ وہ یمن سے بیدخل افراد کی پرامن انداز میں ان کے گھروں میں واپسی کیلئے اقدامات کریں ۔ وزیراعظم عمران خان سے سپیکر قومی اسمبلی اسد قیصر، وزیر دفاع پرویز خٹک اور دیگر اراکین قومی اسمبلی نے ملاقات کی۔ملاقات میں خیبر پختونخوا کے ترقیاتی کاموں سے متعلق بات چیت ہوئی اور بلدیاتی نظام سے متعلق وزیراعظم کو آگاہ کیا گیا۔ وزیر اعظم نے ارکان پارلیمنٹ سے خیبر پختونخوا میں گورننس سے متعلق بھی دریافت کیا۔ عمران خان نے ارکان قومی اسمبلی کو گزشتہ حکومتوں کی ناقص پالیسیاں ایوان میں زیر بحث لانے کی ہدایت کی۔وزیر اعظم نے دورہ چین سے متعلق آگاہ کرتے ہوئے کہا کہ چین پاکستان کی ہر طرح سے مدد کرے گا اور شارٹ ٹرم اور لانگ ٹرم معاشی پیکجز دے گا۔ دورہ چین میں رشکئی میں صنعتی زون کو جلد آپریشنل کرنے کا فیصلہ بھی ہوا ہے ۔وزیرِ اعظم نے ممبران قومی اسمبلی کے حلقوں کے مسائل ترجیحی بنیادوں پر حل کرانے کی یقین دہانی کراتے ہوئے کہا کہ ملک میں امن و امان کا قیام اور قانون کی حکمرانی حکومت کی اولین ترجیح ہے ۔اس وقت ملک مشکل صورتحال سے گزررہا ہے لیکن انشا اﷲ آئندہ چھ ماہ میں واضح بہتری دیکھنے میں آئے گی۔ حکومتی وزرا اپنی کارکردگی کے حوالے سے جوابدہ ہیں۔ احتساب سے خائف عناصر کے شورو غل سے قطع نظر حکومت عوام سے کئے گئے وعدے کو پایہ تکمیل تک پہنچانے کیلئے پرعزم ہے ۔ وزیر اعظم سے قبائلی علاقہ جات کے دو ارکان قومی اسمبلی محسن داوڑ اور علی وزیر نے بھی ملاقات کی جس میں فاٹا کے مسائل پر بات کی گئی۔ وزیر اعظم نے کہا فاٹا میں گڈ گورننس یقینی بنائیں گے ۔ قبائلی علاقوں میں ترقیاتی کام حکومت کی اولین ترجیح ہے ۔ فاٹا کے رہائشیوں کو تمام حقوق فراہم کئے جائیں گے ۔وزیرِ اعظم نے متروکہ وقف املاک بورڈ میں بڑے پیمانے پر بے قاعدگیوں اور مالی بدانتظامی پر سخت تشویش کا اظہار کرتے ہوئے متروکہ وقف املاک بورڈ کا فرانزک آڈٹ کرانے کا حکم دیاہے جبکہ سیکرٹری مذہبی امور کوہدایت کی گئی کہ آئندہ وفاقی کابینہ کے اجلاس میں متروکہ وقف املاک بورڈ کے تمام معاملات پیش کئے جائیں۔ وزیرِ اعظم کی زیرِ صدارت اجلاس میں وزیرِ اعظم کو متروکہ وقف املاک بورڈ کے حوالے سے تفصیلی بریفنگ دی گئی۔ذرائع کے مطابق وزیر اعظم کو ناجائز قابضین کے حوالے سے بھی رپورٹ پیش کی گئی۔ اجلاس میں متروکہ وقف املاک بورڈ کی تنظیم نو اورمستقبل میں متروکہ املاک کے بہترین انتظام اور اس کے اثاثوں کے مثبت استعمال کو یقینی بنانے کیلئے خصوصی ٹاسک فورس کے قیام کا اصولی فیصلہ کیا گیا۔وزیراعظم کو غربت کے خاتمے اوراس سے متعلقہ اقدامات اور اصلاحات کے بارے میں بریفنگ دی گئی۔اجلاس میں جامع اور مربوط حکمت عملی پر غوروخوض کیاگیا ۔فنی تعلیم کی ترویج ، روزگار کے مواقع میں اضافہ،مالی امدادتک رسائی،سستی رہائش ،سماجی تحفظ اور صحت انصاف کارڈکے حوالے سے بھی بریفنگ دی گئی۔ وزیر اعظم نے کہاپی ٹی آئی حکومت غربت کے خاتمے کو صرف مالی امداد تک محدود نہیں رکھنا چاہتی بلکہ دیگر شعبوں میں اصلاحات اور روزگار کے مواقع فراہم کرکے ایک پائیدار حل چاہتی ہے ۔انہوں نے ہدایت کی کہ غربت کے خاتمے کیلئے نچلی سطح پر لوکل گورنمنٹ کے نظام کو استعمال کیا جائے تاکہ ضرورتمندوں تک پہنچا جا سکے او ر اخراجات کا ضیاع نہ ہو ۔ وزیر اعظم نے ملک بھر میں عید میلاد النبی شایان شان طریقے سے منانے کی ہدایت کردی ۔ وزیر اعظم سے وفاقی وزیر اطلاعات فواد چودھری نے ملاقات کی ۔ملاقات میں طے پایا کہ عید میلاد النبی کے بابرکت موقع پر رحمتہ العالمین کانفرنس کے انعقاد کیا جائے گا۔ رحمتہ العالمین کانفرنس کے انعقاد کیلئے وزیر مذہبی امور نور الحق قادری کی سربراہی میں آرگنائزنگ کمیٹی تشکیل د یدی گئی۔ کمیٹی میں وزیر اطلاعات فواد چودھری ، معاون خصوصی افتخار درانی، سینیٹر فیصل جاوید، ڈاکٹر بابر اعوان، اعجاز چودھری، ڈاکٹر عامر لیاقت اور وزیر مملکت علی محمد خان شامل ہوں گے ۔ وزیراعظم نے پنجاب حکومت کو شرپسندوں کی کارروائیوں سے شہریوں کی املاک کو نقصانات کے ازالے کیلئے معاوضہ پیکج تیار کرنے کی ہدایت کی ہے ۔ وزیراعظم نے ہندو برادری کو دیوالی کے پرمسرت تہوار پر مبارکباد دی ہے ۔ اپنے ٹویٹ میں وزیراعظم نے ہندو شہریوں کیلئے دیوالی کے موقع پر نیک خواہشات کا اظہارکیا۔