لاہور(نمائندہ خصوصی سے ) پنجاب وبائی امراض سے بچاؤ اور کرونا کنٹرول آرڈیننس 2020 کی مزیدتفصیلات سامنے آگئیں۔ذرائع کے مطابق پنجاب حکومت کے آرڈیننس کے تحت پنجاب کے تمام نجی و سرکاری میڈیکل سٹاف کو ڈیوٹیاں اسائن کی جاسکیں گی۔ آرڈیننس کے تحت وبائی مرض پر قابو پانے کیلئے نجی و سرزرکاری میڈیکل سہولیات کا کنٹرول انتظامیہ کے پاس رہیگا۔ ڈپٹی کمشنرزبوقت ضرورت کسی بھی شخص کے حوالے سے احکامات جاری کر سکیں گے ۔ آرڈیننس کے تحت ڈپٹی کمشنر کے احکامات پر پولیس کسی بھی جگہ میں داخل ہو سکے گی اور ضرورت کے مطابق فورس کا استعمال بھی کر سکے گی۔ذرائع نے بتایا کہ آرڈیننس کے تحت ہر قسم کی تقریبات پر مکمل پابندی عائد ہو گی ۔ کسی شہری کے کسی بھی جگہ داخلے ، اخراج اور رکنے کا کنٹرول انتظامیہ کے ہاتھ میں ہو گا۔ وبا کے حوالے سے مشتبہ شخص کو 48 گھنٹوں تک مخصوص جگہ پرسکریننگ کیلئے رکھا جاسکے گا۔ تشخیص کے بعد رپورٹ منفی یا مثبت آنے کی صورت میں مشتبہ شخص کو گھر یاقرنطنیہ بھیجا جائیگا۔ سکریننگ کرنیوالامیڈیکل سٹا ف خصوصی احتیاط کر نے کا پابند ہوگا۔ احکامات کی خلاف ورزی پر پہلی مرتبہ 2 ماہ قید اور 50 ہزار تک جرمانہ ہو گا۔ دوسری مرتبہ خلاف ورزی کی صورت میں کسی شخص کو 6 ماہ تک قید اور 1 لاکھ تک جرمانہ کیا جائیگا۔