کراچی/حیدرآباد/کوٹری(سٹاف رپورٹر/ بیورو رپورٹ) چیئرمین پیپلزپارٹی بلاول بھٹو زرداری نے کہا ہے کہ مولانا فضل الرحمن نے اسلام آباد دھرنے کا فیصلہ خود کیا،پیپلزپارٹی انکی اخلاقی حمایت کریگی،فضل الرحمن اسلام آباد میں دھرنا دینگے اورمیں پورے ملک میں عوامی رابطہ مہم چلاؤں گا،ہمارا بیانیہ ایک ہی ہے ،نااہل کٹھ پتلی وزیراعظم کو گھرجانا ہوگا،تھانہ احمد خان میں ایم پی اے ملک اسد سکندرسے اُنکی والدہ کے انتقال پرتعزیت کے بعد میڈیا سے گفتگوکرتے ہوئے انہوں نے کہا کہ فضل الرحمن کی اپنی سیاست اورمسائل ہیں،انہوں نے کہا کہ سلیکٹڈ حکومت غلطی پرغلطی کررہی ہے اوراس نے جو سلوک معیشت کیساتھ کیا ہے وہ ناقابل برداشت ہے ،حکومت نہ صرف ملکی مسائل حل کرنے میں بلکہ کشمیرکے نازک مسئلے کو حل کرنے میں بھی ناکام ہوچکی ہے ،انہوں نے کہا کہ وفاقی حکومت یہ سمجھتی ہے کہ وہ اپوزیشن پر مقدمات بناکربلیک میل کریگی،میں نے پہلے بھی کہا تھا کہ جسکو جیل میں ڈالنا ہے ڈال دیں، ہم اپنا مؤقف نہیں بدلیں گے ،انہوں نے کہا کہ وزیراعظم کے پروگرام کا پتہ نہیں وہ جو بھی اعلان کرتے ہیں اُس پریوٹرن لے لیتے ہیں،ہم کچھ کہہ نہیں سکتے کہ وہ کراچی آئیں گے یا نہیں،18ویں ترمیم کے تحت سندھ کواین ایف سی میں حصنہ نہیں مل رہا جسکا نقصان لاڑکانہ سے کراچی تک ہورہا ہے ،انہوں نے کہا کہ وزیراعظم اور انکی ٹیم کراچی سے متعلق ڈرامے بازی کررہی ہے ،جی ڈی اے ،ایم کیوایم اورحکومت کا کٹھ پتلی اتحاد ہمیشہ سندھ کو توڑنے کی سوچ رکھتا ہے ،انکا الیکشن میں مشترکہ منشورتھا کہ ہم کراچی کوالگ کردیں گے ۔بعد ازاں بلاول نے حیدرآباد میں رکن قومی اسمبلی طارق علی شاہ جاموٹ سے انکی والدہ کے انتقال پرتعزیت کی۔