اسلام آباد(خبر نگار خصوصی،وقائع نگار خصوصی ،مانیٹرنگ ڈیسک)اپوزیشن جماعتوں کے رہنماؤں نے کہا ہے چینی بحران کے ذمہ دار وزیراعظم کواتنی آسانی سے بھاگنے نہیں دینگے ۔شوگرانکوائری کمیشن کی رپورٹ پراپنے ردعمل میں صدرمسلم لیگ ن شہباز شریف نے کہا عمران خان کا چینی کمیشن بنانا الٹا چور کوتوال کو ڈانٹنا ہے ،چینی ایکسپورٹ کا فیصلہ وزیراعظم نے کیا، اب یہ ذمے داری ان کی ہے ،چینی ایکسپورٹ معاملے میں اصل ذمہ دارعمران خان ہیں اورپھربزدارکی باری آتی ہے ،چینی ایکسپورٹ سے فائدہ اٹھانے والوں میں وہ لوگ ہیں جنھوں نے عمران خان کاکچن چلایا،کمیشن اتنا خوفزدہ تھا کہ وزیراعظم کو بلا نہ سکا،نوازشریف بطوروزیراعظم جے آئی ٹی میں پیش ہوسکتے ہیں تو انکو کونساسرخاب کاپرلگاتھا، شاہد خاقان عباسی کمیشن میں پیش ہوئے ، ان کو توخود پیش ہونا چاہیے تھا، اس سکینڈل میں میرے خاندان نے کوئی چینی ایکسپورٹ نہیں کی،شریف خاندان کی مل رحیم یار خان میں بندتھی، ایکسپورٹ کاسوال ہی نہیں پیداہوتا، وزیراعظم نیازی نے اپنے پیاروں کو خوش کیا،قومی اسمبلی کے 5جون سے شروع ہونے والے اجلاس میں ضرورشرکت کرونگا،ڈاکٹرزنے سختی سے منع کیا اس لئے گزشتہ اجلاس میں نہیں گیا،2018 اور19 کے اعدادوشمار سے ثابت ہوجائیگاکہ کوئی ایکسپورٹیبل سرپلس نہیں تھا،ای سی سی کے فیصلوں کی توثیق کابینہ کرتی ہے ،وزیراعظم نے اسد عمر کو لگایا ، چینی ایکسپورٹ کے فیصلے کے بعد ڈالر کی قیمت میں 40 روپے اضافہ ہوا،یہ فائدہ بھی ایکسپورٹرز نے حاصل کیا،سلمان شہباز پاکستان سے کیوں غائب ہیں؟یہ سوال آپ ان سے کریں ،سلمان شہباز میرا بیٹا ہے لیکن اس کے کاروبار سے میرا دور دور تک کوئی لینا دینا نہیں،نیب نیازی گٹھ جوڑ نے نیب کے انصاف کرنے کا بیڑا غرق کردیا۔شاہدخاقان عباسی نے کہا ایک اور جھوٹی پریس کانفرنس میں عمران خان کی چوری چھپانے کی تفصیل بیان کی گئی،تمام فیصلوں کی منظوری دینے والے عمران خان، حفیظ شیخ، اسد عمر اور بزدار اصل ذمہ دار ہیں ، انہیں گرفتا رکیاجائے ۔ میڈیاپرتماشہ لگاکرعمران خان کواین آراودینے کی ناکام کوشش کی گئی ہے ،میڈیاپرسرکس میں اصل ذمہ دار وزیراعظم اوربزدارکاذکر تک نہیں،عمران خان نے خوداور کابینہ کوبچانے کیلئے رپورٹ کاسرکس لگایا،عمران خان کوبچانے کے لئے ایف آئی اے اورحکومتی اختیارکا بدترین استعمال ہوا،سچ یہ ہے وزیراعظم نے چینی برآمدکی اس وقت اجازت دی جب چینی کی قلت تھی،رپورٹ پڑھنے کے بعداورمشاورت کیساتھ مسلم لیگ ن اگلے لاعمل کافیصلہ کرے گی۔پیپلزپارٹی کے مرکزی ترجمان مولابخش چانڈیونے اپنے ردعمل میں کہا چینی کمیشن کی رپورٹ عمران خان کی کمزورکرسی کوسہارانہیں دے سکتی،عمران خان نے اپنی سیاسی ساکھ بحال کرنے کیلئے ڈرامہ رچایا،تحقیقات میں چینی ایکسپورٹ کرنے والوں کاذکرہے نہ سبسڈی دینے والوں کا،وزیراعظم عمران خان اورای سی سی نے چینی ایکسپورٹ کرنے کی اجازت دی،خان صاحب کے کٹھ پتلی عثمان بزدارنے شوگرملزکوسبسڈی دی،خان صاحب اب سیاسی مخالفین کوگھیرنے کیلئے حربے استعمال کررہے ہیں،عمران خان اوربزداربھی بری الذمہ،اس سے بڑادھوکہ کیاہوسکتاہے ؟۔پیپلزپارٹی کی سیکرٹری اطلاعات نفیسہ شاہ نے کہاآ ٹا چینی بحران کا ذمہ دار صرف ریگولیٹرز کو قرار دینا مضحکہ خیز ہے ،عوام منتظر تھے کہ تمام ذمہ داران کے نام سامنے لائے جائیں گے لیکن آٹا چینی بحران کی رپورٹ خاموش ہے ،حکومت نے اپنے قریبی لوگوں کو رعایت دینے کے لئے معاملے کو ڈھیل دے دی ،اپنے لوگوں کو بچانے کے لئے معاملے کو تاخیر کاشکار بنانے کے راستے تلاش کئے جا رہے ہیں، پیپلز پارٹی عوام کی جیبوں پر ڈالے گئے ڈاکے کو دبنے نہیں دے گی۔