BN

کالم



آج کے کالم 


  


کالم آرکیو



تبدیلی کا ہنی مون

جمعه 04 اکتوبر 2019ء
شاہین صہبائی
ہر سیاسی لیڈر بڑے کام کرنے کے لئے اپنی دانست میں سب سے بہترین وقت کا انتخاب کرتا ہے اور ہر سیاسی فیصلے کی ٹائمنگ سب سے اہم ہوتی ہے۔ عمران خان نے جنرل اسمبلی میں ایک دبنگ خطاب کرکے جو کشمیر کے مسئلے پر اثر ڈالا وہ تو اپنی جگہ مگر داخلی ملکی سیاست میں انہوںنے اپنے لئے ایک ایسا موقع پیدا کر لیا ہے جس کی مثال اسی طرح ہے جیسے کوئی لیڈر الیکشن جیت کر جب آتا ہے تو کچھ مہینے اس کے پاس ہوتے ہیں کہ مشکل اور کڑوے فیصلے کرے جسے عام لفظوں میں ہنی
مزید پڑھیے


بلی کا رنگ

جمعه 04 اکتوبر 2019ء
ہارون الرشید
ڈنگ سیائو پنگ کو عمران خان سے زیادہ مزاحمت کا سامنا تھا ۔رفتہ رفتہ، دھیرے دھیرے اس نے انہیں سمجھایا : سوال یہ نہیں ہوتا کہ اس کا رنگ سیاہ ہے یا سفید ، دیکھنا یہ ہوتاہے کہ بلی چوہے پکڑتی ہے یا نہیں ۔ رفتہ رفتہ بتدریج اپنے لوگوں کو اس نے قائل کر لیا اور اس لیے بھی وہ قائل ہو گئے کہ ہن برس رہا تھا ، ویرانے آباد ہو رہے تھے ۔ اپنے نائبین کو عمران خان کیا قائل کر سکتے ہیں ؟ چیف آف آرمی سٹاف جنرل قمر جاوید باجوہ کے ساتھ ملاقات میں کاروباری
مزید پڑھیے


تاجروں اور صنعتکاروں کی آرمی چیف سے ملاقات

جمعه 04 اکتوبر 2019ء
اداریہ
ملک کے نمایاں تاجروں اور صنعتکاروں نے آرمی چیف سے ملاقات میں معاشی جمود پر گہری تشویش کا اظہار کرتے ہوئے ان سے معاشی سرگرمیاں بحال کرنے کے لئے اپنا کردار ادا کرنے کی اپیل کی ہے۔ سابق حکمرانوں کی غلط معاشی پالیسیوں اور بے دریغ قرضوں کا حصول نہ صرف معاشی بحران کی وجہ بنا بلکہ نگران حکومت کے دور میںہی معیشت کے دیوالیہ ہونے کی باتیں شروع ہو گئی تھیں۔ موجودہ حکومت کو اقتدار سنبھالنے کے بعد نہ صرف اپنے منشور کے برعکس دوست ممالک سے معاونت کی درخواست کرنا پڑی بلکہ نا چاہتے ہوئے آئی ایم ایف
مزید پڑھیے


وزیر اعظم کا یکساں نظام تعلیم کی تشکیل کا عزم

جمعه 04 اکتوبر 2019ء
اداریہ
وزیراعظم عمران خان نے دینی مدارس کے طلبہ کی تقسیم انعامات کی تقریب سے خطاب کرتے ہوئے اس عزم کا اظہار کیا ہے کہ دینی مدارس کے طلبہ کو بھی جدید عصری تعلیم کے یکساں مواقع دیئے جائیں گے۔ ایک ہی ملک میں تین قسم کے تعلیمی نصاب بڑی ناانصافی ہے۔ ہماری حکومت طبقاتی نظام تعلیم کو ختم کرے گی۔ وزیراعظم کا یہ کہنا بالکل بجا اور درست ہے کہ برصغیر میں انگریز کے نظام تعلیم نے معاشرے میں طبقات پیدا کئے، پھر یہیں سے امیر غریب کا چکر شروع ہوا اور نظام تعلیم کئی حصوں میں بٹ گیا اور
مزید پڑھیے


افغان طالبان کا دورہ پاکستان

جمعه 04 اکتوبر 2019ء
اداریہ
افغان امن عمل کی بحالی کے لئے کوششیں تیز ہو گئیں۔ سینئر طالبان رہنما ملا عبدالغنی برادر کی قیادت میں 11رکنی طالبان وفد اسلام آباد میں پہنچ گیا ہے۔ جبکہ طالبان کے ساتھ دوحہ میں مذاکرات کرنے والا5 رکنی امریکی وفد بھی نمائندہ خصوصی زلمے خلیل زاد کی قیادت میں منگل کی شب سے اسلام آباد میں موجود ہے۔ لہذا وفود کے مابین ملاقات اور مذاکرات کی بحالی کا قوی امکان ہے۔وزیراعظم عمران خان سے طالبان وفد نے ملاقات کی جس میں افغان امن عمل سے متعلق بات چیت کی گئی، ملاقات میں آرمی چیف جنرل قمر جاوید باجوہ اور
مزید پڑھیے


چند فکری سوالات۔ تازہ بہ تازہ

جمعرات 03 اکتوبر 2019ء
سجاد میر
صرف کشمیر کا مسئلہ ہی زندہ نہیں ہوا‘ اس کے ساتھ بعض بنیادی اصولی سوال بھی پیدا ہو گئے ہیں۔ اس کا یوں تو مجھے کئی دن سے خیال تھا کہ کہیں ہمارا تہذیبی پیراذئم شفٹ تو نہیں ہو رہا‘ تاہم ان دنوں اس خیال میں شدت آ گئی ہے۔ مثال کے طور پر اوریا مقبول جان نے یہ کہہ کر بنیادی سوال اٹھا دیا ہے کہ ہم کہتے رہتے ہیں کہ جہاد اس وقت فرض ہوتا جب ریاست اس کا باضابطہ اعلان کرے تو اب ہمارے وزیر اعظم نے جہاد کا اعلان کر دیا ہے‘ اس لئے میدان میں
مزید پڑھیے


’’جانِ استقباؔل، پاکستان‘‘۔ قائد ِؔ ملّت ؒ اور عمران ؔخان!‘‘

جمعرات 03 اکتوبر 2019ء
اثر چوہان
29ستمبر کو ، وزیراعظم جناب عمران خان ، نہ صِرف کشمیریوں بلکہ عالمِ اسلام کے سفیر کی حیثیت سے ، نعرۂ رسالت ؐ اور اِنسانی حقوق کی سربلندی کے سلسلے میں کامیابیاں سمیٹتے ہُوئے جب وطن واپس پہنچے تو ، اُن کا اسلام آباد کے ہوائی اڈے پر (قومی اخبارات کی سُرخیوں کے مطابق ) ۔ ’’پُر تپاک ، فقید اُلمِثال ، شاندار، اور یادگار استقبال کِیا گیا‘‘ ۔معزز قارئین!۔ عربی ؔ زبان کے لفظ استقبال ؔ کے تو دوسرے معنی بھی ہیں ، جو ’’شاعرِ پاکستان‘‘ جناب حفیظ جالندھری نے ، پاکستان کے قومی ترانہ میں استعمال کئے ہیں
مزید پڑھیے


ریڈیو پاکستان سے عابد علی تک! (آخری قسط )

جمعرات 03 اکتوبر 2019ء
ناصرخان
دوپہر ایک دو بجے تک سب آنا شروع ہوتے اور پھر رونق لگتی چلی جاتی ۔ ڈرامہ پروڈکشن کا یہ آفس بالکل شاہ نور سٹوڈیو کے عقب میں یا قریب ترین تھا۔ مُراد علی کا چونکہ بچپن بھی سٹوڈیو میں ہی گزرا تھا، تو وہ فلم اور فلمی شخصیات کی ڈائرکٹری تھا۔ کون فلم میں کام کر رہا ہے؟ کون چھوڑ گیا ہے؟ کو ن کتنے میں بُک ہو گا؟ کس کے پاس ڈیٹس ہی نہیں۔ کون بالکل فارغ گھر بیٹھا ہے۔ ایسے میں سٹوڈیوز سے فنکار آتے رہتے اور کاسٹنگ بھی ہوتی رہتی ۔ کچھ دیر کیلئے عابد
مزید پڑھیے


سرمائے کی دنیا میں عمران خان کا سچ

جمعرات 03 اکتوبر 2019ء
قدسیہ ممتاز
عمران خان نے بھری بزم میں راز کی بات اپنے روایتی دبنگ انداز میں کہی تو اقوام عالم کی باگ ڈور تھامنے اور اسے اپنے قطب نما کی سوئی کی سمت ہانکنے والوں کے ماتھے پہ بل پڑنے لازمی تھے۔ ان کا کہنا بجا بھی تھا کہ جس منی لانڈرنگ کی تلوار مغربی ممالک نے پاکستان کے سر پہ لٹکا رکھی ہے، وہ جاتی کہاں ہے۔ اسے تحفظ کون دیتا ہے۔اس تک رسائی کس کے قوانین ناممکن بناتے ہیں اور غریب ممالک کو غریب تر کرنے میں ہمارے کرپٹ حکمرانوں کا ہاتھ کون بٹاتاہے؟یہ دولت کہاں استعمال ہوتی ہے
مزید پڑھیے


گیلانی صاحب ! کب بات کریں گے ؟

جمعرات 03 اکتوبر 2019ء
ظہور دھریجہ
9 اگست 2019 ء کو تھانہ فیروز آباد ایسٹ کراچی کے علاقے میں رحیم یارخان کے علاقے رکن پور سے تعلق رکھنے والے غلام یٰسین کی بیٹی کو بے دردی کے ساتھ قتل کر دیا گیا اور اسے خودکشی کا رنگ دینے کی ناکام کوشش کی گئی ۔جس کی ایف آئی آر نمبر 466 بجرم 302/34 واقعے کے 14 دن بعد 23 اگست 2019 ء کو تھانہ فیروز آباد ایسٹ کراچی میں درج کی گئی مگر ملزمان آج بھی دندناتے پھر رہے ہیں ۔ مقتولہ کے ورثاء انصاف کیلئے دربدر ہو کر دھکے کھا رہے ہیں ۔ مقتولہ کے
مزید پڑھیے


کیا مار آستیں ہیں تیری نگاہ میں؟

جمعرات 03 اکتوبر 2019ء
جسٹس نذیر غازی
دشمنی کوئی یکطرفہ تو نہیں چومکھی لڑائی ہے۔ افراد نہیں اقوام کا ٹکرائو ہے۔ محض ٹکرائو نہیں‘ جلتی ہوئی آگ کا طوفان بلاخیز۔ کشمیر ‘ فلسطین ‘ افغانستان ‘ تازہ واردات اچانک ہوتی ہے ۔زمین پر قبضہ‘ وسائل پر قبضہ‘ اور آزادی پر قبضہ ۔ہر جارح اور قابض ہاتھوں میں ہاتھ ڈالے رقص ابلیس سے اسلامی کے وجود کو زدو کوب کر رہا ہے ایک دوسرے کی حمایت میں ہر حربہ اور چال ان کے نزدیک بین الاقوامی قانون سلامتی کا درجہ رکھتی ہے۔ مناسب حالات اور مناسب وقت پر وہ زخم خوردہ ملت اسلامیہ کو کچوکے لگاتے ہیں اور اپنی
مزید پڑھیے


قصہ تھیوری اور پریکٹیکل کا

جمعرات 03 اکتوبر 2019ء
ڈاکٹر طاہر مسعود
کسی مغربی مصنف نے صحافت اور ادب کا فرق یہ بتایا تھا کہ ادب کو کوئی پڑھتا نہیں اور صحافت میں پڑھنے کے لئے کچھ ہوتا نہیں۔ ہمیں اس نقطۂ نظر سے چنداں اتفاق نہیں۔ ہاں اگر یہ کہا جاتا کہ اخبار میں چند مستثنیات کے سوا (مثلاً ہمارا کالم) پڑھنے کے لئے کچھ نہیں ہوتا تو ہم مان جاتے کہ بات دل کو لگتی ہے اوپر جو نقل کیا گیا قول ۔ یہ اس زمانے کا ہے جب ہمارے وزیر اعظم عمران خان اس عہدہ جلیلہ پر فائز نہ ہوئے تھے اور نہ اتنی دانش مندانہ تقریروں کا وقت
مزید پڑھیے


عارضی امیدیں

جمعرات 03 اکتوبر 2019ء
عبداللہ طارق سہیل
اپوزیشن کے کچھ بھولے ناتھ دو خبروں سے بہت خوش ہیں۔ ایک تو یہ کہ ڈپٹی سپیکر قاسم سوری نااہل ہو گئے۔ ان کے حلقے میں سنا ہے ‘62,61ہزار ووٹ جعلی پڑے تھے(شکر ہے ‘ 62‘63ہزار نہیں پڑے تھے) دوسرے یہ کہ الیکشن کمشن میں فارن فنڈنگ کیس کھل گیا ہے۔ اس کیس میں بہت سے راز ہیں۔ ایسے کہ سامنے آئے تو بھونچال کی سی فضا بن جائے گی۔ آنکھیں پھٹی کی پھٹی اور منہ کھلے کے کھلے رہ جائیں گے۔ چنانچہ بھولے ناتھ اپنی کشت امید ہری ہوتے دیکھ رہے ہیں۔ کسی پر امید کو ناامید کرنا اچھی
مزید پڑھیے


جو روٹی رات دی پوری کریندیاں شام تھی ویندی

جمعرات 03 اکتوبر 2019ء
ڈاکٹر حسین پراچہ
سرائیکی زبان میں شعر کہنے والا شاکر شجاع آبادی شدتِ احساس اور بے ساختگی اظہار کا شاعر ہے ۔ شاکر کی نوا غریبوں کی آواز بن گئی۔ شاکر اس بارے میں اپنے خدا سے بھی ہمکلام ہو کر شکوہ کرتا رہتا ہے اور کہا ہے کہ مالک تیری جنت کی دلفریت نعمتیں یقینا برحق ہیں مگر اپنی غریب مخلوق کو اس دنیا میں کیوں بھوکا ما رہا ہے۔ شاکر نے اپنے خالق دوجہاں کی بارگاہ میں بارہا نہ صرف شکوہ کیا بلکہ غریبوں کی بھر پور وکالت بھی کی حتیٰ کہ یہاں تک زاری کرتا ہے کہ مالک ایک بار
مزید پڑھیے


تین تبدیلیاں جو کابینہ میں ناگزیر ہیں

جمعرات 03 اکتوبر 2019ء
محمد اظہارالحق
شاید یہی بنانا ری پبلک تھی‘ یا کوئی اسی جیسی‘ جہاں وزیر تعلیم کو جیلوں کی وزارت بھی دے دی گئی۔ کسی نے پوچھا کہ جناب! دونوں وزارتوں میں کیسے کام کریں گے؟ وزیر نے جواب دیا اساتذہ کو جیلوں میں بند کردوں گا! یہی کچھ جنرل ضیاء الحق کے زمانے میں ہوا۔ جنرل صاحب نے این ایل سی کے انچارج جرنیل کو ریلوے کی وزارت بھی دے دی! یہیں سے پاکستان ریلوے کے زوال کا آغاز ہوا۔ کارگو سامان رفتہ رفتہ این ایل سی کے ٹرکوں کو منتقل ہو گیا۔ ٹرک این ایل سی کے اپنے بھی تھے اور یہ
مزید پڑھیے






کالم نگار

اداریہ
اداریہ









سجاد میر
شہر آشوب

مستنصر حسین تارڑ
ہزار داستان

مجاہد بریلوی
شہر ناپرساں


مبشر لقمان
کھرا سچ

عبداللہ طارق سہیل
وغیرہ وغیرہ


بشریٰ رحمان
چادر چاردیواری اور چاندنی

نو شی گیلا نی
کا لم کہا نی


افتخار گیلانی
مکتوب دہلی

خاور نعیم ہاشمی
پردہ اٹھتا ہے


رضا رومی
رومی نامہ

انجم نیاز
یادداشت از امریکا



خاور گھمن
گھمن گھیریاں


سعید خا ور
حر ف درما ں

راوٗ خالد
رولا رپہ



اشرف شریف
شہر نامہ

ایچ اقبال
ایچ اقبال


قدسیہ ممتاز
حرف تازہ




سعود عثمانی
دل سے دل تک

اثر چوہان
سیاست نامہ

عامر متین
عامر متین

ارشاد محمود
بات یہ ہے


ناصرخان
فرنٹ لائن

عدنان عادل
امروزوفردا

ذوالفقار چودھری
تیسری آنکھ

شاہین صہبائی
چلتے چلتے


رعایت اللہ فاروقی
گفتار و پندار

یوسف سراج
نقش قدم


عمر قاضی
لالہ صحرائ

عبدالرفع رسول
مکتوب سری نگر

احمد اعجاز
کہانی کی کہانی

خالد ایچ لودھی
دل کی باتیں

رحمت علی رازی
درون پردہ

وسی بابا
باتاں


راحیل اظہر
غبارِخاطر

محمد عامر رانا
اقلیم در اقلیم