BN









کالم


آج کے کالم 


  


کالم آرکیو


ٹیپو سلطان کی نفرت میں انگریزوں نے کتنے شیر مارے؟

منگل 27 جولائی 2021ء
آصف محمود
گزشتہ کالم میں اس پہلو پر بات کی گئی کہ ایک غیر ملکی معزز مہمان نے ہمیں وائلڈ لائف کے تحفظ کا درس دیا تو یاد آیا کہ کس بے رحمی سے انگریزوں نے ہندوستان میں شیروں اور وائلڈ لائف کا قتل عام کیا اور قریبا 80 ہزار شیروں کا شکار کیا ۔ آج اس افسوسناک معاملے کے مزید دردناک پہلو پر بات کریں گے کہ یہ سب کیوں کیا گیا؟ اس کے یقینا بہت سے عوامل ہو سکتے ہیں۔ایک قابض قوت مقبوضہ علاقوں کے ساتھ ایسا ہی حسن سلوک کیا کرتی ہے لیکن یہاں شیروں کے قتل عام میں ایک
مزید پڑھیے


عنایتیں کیا کیا!

منگل 27 جولائی 2021ء
ڈاکٹر اشفاق احمد ورک
سر پر سنجیدہ جناح مارکہ ٹوپی، بدن پہ جچتی ہوئی دیدہ زیب شیروانی،لمبی شرعی داڑھی سے سجا ہوا نہایت مطمئن چہرہ، شرم و حیا کو مَس کرتی عینک،چہرے پہ تھوک کے حساب سے برستی شرافت… کوئی ان کو پہلی نظر میں دیکھ کے کہہ نہیں سکتا تھا کہ یہ بابا ہنس بھی سکتا ہے اور سچ بات بھی یہی ہے کہ مشاعرہ پڑھتے ہوئے بھی شاید ہی کبھی انھیں ہنستے ہوئے دیکھا گیا ہو… یہ کام انھوں نے اپنے قارئین پہ چھوڑ رکھا تھا، قارئین پر اعتماد جو تھا۔حیدرآباد جیسے مضافاتی شہر میں بیٹھ کے قومی سطح کے مشاعروں میں
مزید پڑھیے


اگر اب بھی نہ جاگے ۔پیگاسس جاسوسی اسکینڈل

منگل 27 جولائی 2021ء
افتخار گیلانی
چند ماہ قبل فرانسیسی میڈیا تنظیم فوربڈن ا سٹوریز کے ایک عہدیدار کی ای میل موصول ہوئی، جس میں بتایا گیا کہ اسرائیلی کمپنی این ایس او کے سافٹ وئیر پیگاسس سے متعلق ایک سال سے جاری ان کی تحقیق کے مطابق میرا فون بھی نگرانی کی لسٹ میں ہے۔ میں نے اس کو سنجیدگی کے ساتھ نہ لیکر جواب لکھا کہ ’’ کوئی اتنی اہم شخصیت نہیں ہوں، جس کیلئے بھارتی یا اسرائیلی خفیہ اداروں کی نیندیں حرام ہوں اور وہ اس قدر وسائل اور وقت میرے فون کی نگرانی کرنے کیلئے صرف کردیں۔بطور صحافی ہمارا کام جلد یا
مزید پڑھیے


خیبر پختونخوا کے ہسپتالوں میں عملہ غیر حاضر

منگل 27 جولائی 2021ء
اداریہ
خیبر پختونخوا کے تحصیل ہیڈ کوارٹر اور ڈسٹرکٹ ہیڈ کوارٹرز ہسپتالوں میں ڈاکٹرز سمیت دیگر سٹاف کی حاضری موثر مانیٹرنگ سسٹم نہ ہونے کی وجہ سے 100فیصد یقینی نہیں بنائی جا سکی ۔ بلاشبہ پی ٹی آئی حکومت نے صوبے میں اصلاحات کے ذریعے ڈاکٹرز اور پیرا میڈیکل سٹاف کی تنخواہوں اور مراعات میں خاطر خوا اضافہ کر کے اور دور دراز علاقوں میں میڈیکل سٹاف کی تقرری کے ذریعے عوام کو ان دہلیز پر صحت کی سہولیات فراہم کرنے کی قابل تقلید کوشش کی تھی۔ پنجاب اور سندھ میں بھی دور دراز علاقوں میں میڈیکل سٹاف بالخصوص ڈاکٹر
مزید پڑھیے


الیکشن کمیشن: نئے ارکان کی تقرری پر مشاورت شروع کی جائے

منگل 27 جولائی 2021ء
اداریہ
الیکشن کمیشن آف پاکستان کے دو ممبر پانچ سالہ مدت پوری کرنے کے بعد ریٹائر ہو گئے ،الیکشن کمیشن نے وزارت پارلیمانی امور کو 2خطوط لکھے تاہم حکومت اور اپوزیشن میں مشاورت کا آغاز نہ ہو سکا۔الیکشن کمیشن ایک آئینی ادارہ ہے،اس کے کْل ارکان کی تعداد پانچ ہے،جن کا کام انتخابی عذرداریاں،الیکشن سے متعلق شکایتیں نمٹانا، الیکشنزکی تیاری کی نگرانی کرنا، حلقہ بندیاں،ان پر اعتراضات،نااہلی کی درخواستوں اور فریقین کے دلائل سن کر ان پر فیصلہ دینا ہوتا ہے۔ 22ویں ترمیم کے بعد ان ارکان کا انتخاب پانچ سال کیلئے اس طرز پر ہوتا ہے کہ ڈھائی سال بعد
مزید پڑھیے


آزاد کشمیر کے انتخابی نتائج

منگل 27 جولائی 2021ء
اداریہ
تحریک انصاف نے 25نشستوں پر کامیابی حاصل کر کے آزاد کشمیر میں تنہا حکومت بنانے کی صلاحیت حاصل کر لی ہے۔ ابتدائی اندازوں میں تیسرے نمبر پر سمجھی جانے والی پیپلز پارٹی نے حیران کن طور پر 11نشستیں حاصل کر لیں جبکہ مسلم لیگ نون اپنی حکومت بچانے میں بری طرح ناکام ہوئی اور صرف 6نشستیں حاصل کر سکی۔تحریک انصاف نے فقط آزاد کشمیر میں ہی نہیں بلکہ پنجاب اور کے پی کے میں مہاجر نشستوں پر بھی کامیابی حاصل کی ہے جہاں عموماً مسلم لیگ ن عرصے سے جیتتی آئی ہے۔ وفاق میں برسر اقتدار جماعت کی آزاد کشمیر اور
مزید پڑھیے


’’ربّ ڈانگاں نئیں مت ماردا‘‘

منگل 27 جولائی 2021ء
ارشاد احمد عارف
دسمبر 2012ء میں سپین کے ایک شہر میں دوڑ کے مقابلوں کے دوران یہ حیرت انگیز واقعہ پیش آیا‘ مقابلے میں فنش لائن سے چند فٹ کے فاصلے پر کینیا کا اتھلیٹ ابوالمطیع سب سے آگے تھا‘ اسے احساس ہوا کہ وہ دوڑ جیت چکا ہے چنانچہ رک گیا اسپین کا اتھلیٹ ایون فرڈیننڈز اس کے بالکل پیچھے دوڑ رہا تھا۔ مطیع کے رکنے پر وہ بآسانی چند قدم آگے فنش لائن پر پہنچ کر اپنی فتح کو یقینی بنا سکتا تھا مگر اس نے جان لیا کہ مطیع غلط فہمی کا شکار ہے لہٰذا اس نے آواز دی کہ’’
مزید پڑھیے


ہیٹرک

منگل 27 جولائی 2021ء
محمد عامر خاکوانی
تحریک انصاف نے آزاد جموں کشمیر کا الیکشن جیت کر اپنی سیاسی کامیابیوں کی ہیٹرک کر لی ہے۔تین سال پہلے پاکستان کے عام انتخابات میں کامیابی، پھر گلگت بلتستان میں جیت کر حکومت بنانا اور اب آزاد جموں کشمیر میں انتخابی معرکہ مار لینا۔ تحریک انصاف کے حامیوں کی مسرت دیدنی اور قابل فہم ہے۔وہ ہر جیت کو عمران خان کی کرشمہ سازی کا نتیجہ گردانتے ہیں، چاہے فتح میں چند دن پہلے پارٹی میں آنے والے پیراشوٹر الیکٹ ایبلز کا حصہ ہو۔ دلچسپ بات تینوں انتخابات میں تحریک انصاف کی مخالف جماعتوں کاملا جلا ردعمل ملا جلا ہے ۔ مسلم
مزید پڑھیے


امسال وطن عزیزمیں قربانی کی شرح

پیر 26 جولائی 2021ء
عبدالرفع رسول
باقی دنیا کی طرح پاکستان میں بھی ہر سال عید قرباں کے موقع پر مسلمان سنت ابراہیمی کی پیروی میں لاکھوں جانور ذبح کرتے ہیں۔ پاکستان ٹینریز ایسوسی ایشن کے مطابق21سے 23 جولائی سال 2021کوعیدالاضحیٰ کے موقع پر ملک میں 20 سے 22 لاکھ گائے،بیل اور 55 سے 60 لاکھ بکرے و دنبے ذبح کیے گئے ۔ اس کے علاوہ ملک میں 1 لاکھ اونٹ بھی قربان کیے گئے۔جبکہ سال 2020 میں 20 لاکھ گائیں، 31 لاکھ 40 ہزار بکرے، آٹھ لاکھ بھیڑیں، 60 ہزار اونٹ قربان ہوئے۔ سال 2019 ء میں 30 لاکھ گائے، 40 لاکھ بکروں،10 لاکھ
مزید پڑھیے


یہ دھواں سا کہاں سے اٹھتا ہے!

پیر 26 جولائی 2021ء
ریاض مسن
دو ہزار تیرہ کے انتخابات کی آمد آمد تھی۔ پیپلز پارٹی اور ن لیگ کے علاوہ مذہبی اور صوبائیت پرست جماعتوں نے پچھلے پانچ سالوں میں ، سوائے چند جھٹکوں کے ، پورے پاکستان میں مل جل کر حکومت کی تھی۔ دوہزار چھ میں محترمہ بینظیر بھٹو اور میاں نواز شریف کے دستخط سے طے پانے والے میثاق جمہوریت سے شروع ہونے والا یہ سیاسی بھائی چارہ آئین کی شق وار اصلاح سے ہوتا ہوا صوبائی خود مختاری تک پہنچا تھا۔ یہ اتحاد و اتفاق ویسا ہی تھا جیسا انیس سو تہتر کے آئین بنانے کے وقت تھا۔ اس وقت
مزید پڑھیے


پاکستان سے الحاق یا آزادی

پیر 26 جولائی 2021ء
ظہور دھریجہ
وزیر اعظم عمران خان نے آزاد کشمیر کو پاکستان کا صوبہ بنانے کے متعلق الزامات کو مسترد کرتے ہوئے دو ریفرنڈم کروانے کا عندیہ دیا ہے۔ ایک ریفرنڈم میں کشمیری عوام پاکستان یا بھارت کے ساتھ رہنے کا فیصلہ کریں گے۔ ریفرنڈم وہ پاکستان کیساتھ یا آزاد ریاست کے طو رپر رہنے کا فیصلہ کریں گے۔ وزیر اعظم عمران خان نے ایک نئی بات کہہ دی ہے جس پر اپوزیشن جماعتوں کی طرف سے تنقید بھی ہو رہی ہے اور اُن کے بیان کو خلاف آئین قرار دیا جا رہا ہے۔ اب دیکھنا یہ ہے کہ وزیر اعظم اپنی بات
مزید پڑھیے


اور طرح کی شاعرہ

پیر 26 جولائی 2021ء
ڈاکٹر اشفاق احمد ورک
آج سے چونتیس برس قبل یونیوسٹی میں داخلہ لینا مجھ جیسے دیہاتی کی زندگی کا سب سے انوکھا اور کارآمد تجربہ تھا۔ شیخوپورہ کے ایک چھوٹے سے گاؤں سے اُٹھ کے پنجاب کے دل لاہور میں حیرانی بن کے دھڑکنے لگ جانا کوئی معمولی بات نہیں تھی۔ پھر اورینٹل کالج تو لاہور کا بھی جگر تھا۔ گزشتہ دنوں اسی اورینٹل میں امجد صاحب کے لیے منعقدہ تقریب میں راقم نے اپنے مضمون میں انھیں مشورہ دیا کہ وہ اورینٹل میں داخلہ لینے والے ہر اُستاد اور طالب علم سے اپنی نظموں کی رائلٹی وصول کیا کریں کیونکہ یہاںکے جذباتی معاملات میں
مزید پڑھیے


چھٹیوں کے دوران سویا ہوا لاہور

پیر 26 جولائی 2021ء
اشرف شریف
عید کا تیسرا دن لاہور کی گلیوں میں بلا مقصد گھومنے کا ارادہ تھا۔ لگ بھگ 11بجے آصف مجھے لینے آ گیا۔آصف موسیٰ میرا سکول کے زمانے کا دوست ہے‘ ایک لائق طالب علم جس نے میٹرک کے بعد یہ کہہ کر پڑھائی چھوڑ دی کہ یہ کتابیں میری صلاحیتوں کو زنجیر ڈال رہی ہیں۔ آصف نے اپنا فیصلہ درست ثابت کیا۔ہم جب بی اے کر رہے تھے تو وہ راٹ آئرن فرنیچر کا کام جما چکا تھا۔اگلے دو سال میں شارجہ چلا گیا۔وہاں اپنا کارخانہ لگایا۔اب یورپ میں ڈیپارٹمنٹ سٹور کی چین اور شارجہ میں فرنیچرکا بزنس چلا رہا
مزید پڑھیے


’’اک پتر پنجاب دا‘‘

پیر 26 جولائی 2021ء
عمر قاضی
پنجاب کے خوشاب ضلع میں پیدا ہونے والے سکھ صحافی اور ادیب کی زندگی کا بڑا حصہ بھارت میں گذرا مگر اس کا دل اپنے اس وطن کی محبت میں سرشار جہاں وہ پیدا ہوئے۔ وہ ہوائیں جو پنجاب کے کھیتوں میں الہڑ نار کی مانند چلتی ہیں؛ وہ دوپہریں جو اپنی دھوپ اور آتش میں بذات خود جلتی ہیں اور وہ راتیںجو ستاروں سے سج دھج کر گاؤں کے گھروں کے آنگنوں میں اترتی ہیں؛ وہ ساری رتیں اور ساری محبتیں خشونت سنگھ ساری زندگی نہیں بھلا پایا۔ انسان سب کچھ بھول سکتا ہے مگر اپنا بچپن کیسے بھول
مزید پڑھیے


عارف نظامی۔حریت فکر کا مجاہد

پیر 26 جولائی 2021ء
عبداللہ طارق سہیل
عارف نظامی مرحوم کی وفات کی صدمہ انگیز خبر برقی جھٹکے کی طرح تھی۔ مرحوم کچھ دنوں سے علیل اور ہسپتال میں زیر علاج تھے لیکن علالت کی خبر چونکہ میڈیا پر نہیں آئی اس لئے وفات کی خبر اچانک آئی تو یقین نہیں آیا اور یقین جب آیا تو صدمے کی لہر نے دیر تک لپیٹ میں لئے رکھا۔ عارف صاحب بہت بڑے صحافی اور صاحب طرز مدیر تھے۔دی نیشن کے ایڈیٹر کے طور پر کئی بار اداریہ وہ خود لکھا کرتے اور ان کی تحریر سے آشنا قارئین کو پتہ چل جاتا۔صاحب طرز مدیر ہونے کی بات اس لئے
مزید پڑھیے