BN

کالم


آج کے کالم 


  


کالم آرکیو


قوم پرستوں کے پنجاب کے میڈیاسے شکوے

جمعه 03 جولائی 2020ء
محمد عامر خاکوانی
سوشل میڈیا پرموجود بلوچ قوم پرست احباب ایک شکوہ عام طور سے کرتے ہیں کہ ان کے مسائل اور ایشوز مین سٹریم میڈیا اور خاص طور سے پنجاب کے کالم نگار، تجزیہ نگار بات نہیں کرتے۔ یہ شکوہ انہیں کراچی اور خیبر پختون خوا کے صحافیوں سے بھی ہوگا، مگر پنجاب کا نام آتے ہی ہمارے تمام قوم پر ستوں کی زبان اور قلم میں خاص قسم کی تلخی نمودار ہوجاتی ہے۔ اس لئے روئے سخن پنجاب کے اہل قلم کی طرف رہتا ہے۔ ایک دوسری طرح کا شکوہ پچھلے کچھ عرصے سے پی ٹی ایم کے حامی پشتون احباب
مزید پڑھیے


’’سرمایۂ ملّت کانگہباں‘‘

جمعه 03 جولائی 2020ء
ڈا کٹر طا ہر رضا بخاری
علامہ اقبال ؒ کو امام ربّا نیؒ ، حضرت مجدّد الف ثانیؒ، شیخ احمد سر ہندیؒ سے از حد عقیدت و محبت تھی، ان کا خیال تھا کہ سلاسل تصوف میں زیادہ تر سکونی(Static) ہیں، جبکہ نقشبندی سلسلہ حرکی"Dynamic"ـاور حضرت مجدّد الف ثانی سلسلہ نقشبندیہ کی اس حرکیّت " Dynamical" کا نقطۂ کمال ہیں۔ حضرت امام ربانیؒ سے،اقبالؒ کے روحانی تعلق اور لگائو کا یہ عالم تھا کہ جب ان کے ہاں جاوید اقبال کی ولادت ہوئی ، تو انہوں نے منّت مانی کہ وہ بڑا ہوگا تو اس کو حضرت امام ربانیؒکی بارگاہ میں پیش کرونگا۔ چنانچہ29 جون1934ء
مزید پڑھیے


ظلم گزیدہ!!

جمعه 03 جولائی 2020ء
سعدیہ قریشی
ایک چیز جو اللہ کی زمین پر بڑی مستقل مزاجی سے جاری و ساری ہے وہ ظلم ہے۔ خیر کے مقابلے میں شر کی قوتیں زیادہ پائیدار اور مستقل مزاجی سے کارفرما رہتی ہیں۔ خالص اور مستحکم امن‘ دنیا میں کم کم اور نایاب ہے۔ بلکہ خالص امن شاید دنیا کے کسی بھی معاشرے میں موجود نہ ہو۔ ابھی امریکہ میں جس طرح ایک کالے کا گلا گھونٹ کر اس کو سر راہ مار دیا گیا‘ اس سے یہ یقین اور بھی پختہ ہوتا ہے کہ خالص امن کہیں بھی نہیں ہے۔ معاشرے کا کوئی نہ کوئی طبقہ ظلم کی چکی
مزید پڑھیے


سزا

جمعه 03 جولائی 2020ء
ہارون الرشید
یہ ہمارے اعمال کی سزا ہے۔ ہماری خوئے غلامی، ہماری شخصیت پرستی کی، ہمارے جذباتی عدمِ توازن کی۔ سٹاک ایکسچینج پر حملہ بھارت نے کرایا، وزیرِ اعظم کو یقین ہے۔ ظاہرہے کہ اسٹیبلشمنٹ کی توثیق کے بغیر اس درجہ مکمل اطمینان ممکن نہیں۔ بیچارے گنتی کے بلوچ دہشت گرد کیا بیچتے ہیں۔ صدیوں سے سرداروں کی غلامی میں جینے والے، اکثر چٹے ان پڑھ۔ ان میں سے بعض کو تو یہ بتایا گیا ہے کہ خاکی وردی والے اللہ،رسولؐ اور یومِ آخرت پہ ایمان ہی نہیں رکھتے۔ ظاہر ہے کہ یہ افغانستان کی خدمتِ اطلاعاتِ دولتی ہے، جسے این ڈی
مزید پڑھیے


می ٹو

جمعه 03 جولائی 2020ء
عمر قاضی
جرمن ادیب تھامس مین نے لکھا ہے کہ فاشزم کے دور میں ایسے ناجائز الفاظ پیدا ہوتے ہیں جو ہر جائز لفظ سے ان کا حقیقی مقام چھین لیتے ہیں۔ آپ سب کہ سکتے ہیں کہ موجودہ دور کو کسی بھی طرح فاشزم کا دور نہیں کہا جا سکتا۔ اگر یہ دور فاشسٹ نہیں ہے تو پھر اس دور میں ایسے نئے الفاظ کیوں جنم لے رہے ہیں جو پرانے الفاظ سے ان کی حقیقی معنی اور مقام چھیننے کی کوشش کر تے ہیں۔ ایک سندھی شاعر نے کیا خوب لکھا ہے کہ : ’’تم اگر آؤ تو ہیں رات کے راستے
مزید پڑھیے


بلوچ مزاحمت: ادراک سے تہی حکمتِ عملی

جمعه 03 جولائی 2020ء
اوریا مقبول جان
بلوچ قبائل کے رسم و رواج اور عادات و خصائل کا مطالعہ، انگریز سول سروس کے افسران کا معمول تھا۔ آج بھی تمام قدیم اضلاع میں ڈپٹی کمشنروں کے ہاتھ کی لکھی ہوئی ڈائریاں ہر قبیلے، سردار اور مختلف اہم افراد کے بارے میں مشاہدات و تجربات کا ایک وسیع ذخیرہ رکھتی ہیں۔ یہ مجلّد رجسٹر، جنہیں دفتری زبان میں (Personogies) کہا جاتا تھا، ان خفیہ دستاویزات میں سے ہوتا ہے جسے جانے والا آنے والے ڈپٹی کمشنر کے حوالے کرتا تھا۔ انگریزوں کے لکھے ہوئے گزیٹیر کسی بھی ضلع کے بارے میں معلومات کا ایک ایسا ذخیرہ ہیں جن
مزید پڑھیے


مہنگائی میں اضافہ حکومت ریلیف فراہم کرے

جمعه 03 جولائی 2020ء
اداریہ
ادارہ شماریات کی رپورٹ کے مطابق مالی سال 2019-20ء میں مہنگائی کی شرح 10.74فیصد اضافہ ہوا ہے۔ مہنگائی اور بے روزگاری نے پہلے ہی عام آدمی کی زندگی جہنم بنا رکھی تھی کہ رہی سہی کسر کورونا کی وبا کے باعث کاروبار کی بندش نے نکال دی۔ گزشتہ 4ماہ سے صنعتیں اور کاروبار بند ہونے سے حکومتی اعداد و شمار کے مطابق ایک کروڑ افراد بے روزگار ہوئے ہیں۔ ایک رپورٹ کے مطابق پاکستان سٹاک ایکسچینج میں رجسٹرڈ لارج سکیل مینو فیکچرنگ کمپنیوں میں سے 60فیصد سے زائد کمپنیاں لاک ڈائون میں مکمل بند رہیں باقی اداروں نے کارکنوں کی
مزید پڑھیے


اسلام آباد میں نئے مندر کی تعمیر پر تحفظات

جمعه 03 جولائی 2020ء
اداریہ
پنجاب اسمبلی کے سپیکر چودھری پرویز الٰہی نے اپنے ایک ویڈیو بیان میں کہا ہے کہ پاکستان جواسلام کے نام پر وجود میں آیا تھا اس کے دارالحکومت اسلام آبادمیں نئے مندر کی تعمیر نہ صرف اسلام کی روح کے خلاف ہے بلکہ یہ ریاست مدینہ کی بھی توہین ہے۔ سپیکر پنجاب اسمبلی کا یہ کہنا بجا ہے کہ ہم اقلیتوں کے حقوق کے ساتھ ہیں لیکن پہلے سے موجود مندروں کی مرمت کی جانی چاہیے۔ حقیقت بھی یہی ہے کہ اسلام میں اقلیتوں کو جتنے حقوق دیے گئے ہیں دنیا کے کسی مذہب نے نہیں دیے‘ اب جبکہ یہ
مزید پڑھیے


مقبوضہ کشمیر میں بھارتی مظالم جاری

جمعه 03 جولائی 2020ء
اداریہ
بھارتی فورسز نے کشمیر میں درندگی کی ایک اور داستان رقم کر دی۔ سوپور میں تین سالہ بچے کے سامنے اس کے نانا کو بے دردی سے شہید کر دیا۔ نام نہاد آپریشن کے دوران گولیوں کی تڑتڑاہٹ سے خوفزدہ ننھا عیاد نانا کے سینے پر بیٹھ گیا جو اسے بچانے کے لئے اب اس دنیا میں نہیں تھے۔ تین سالہ معصوم بچے کی تصویر نے ہر ذی روح کو بے چین کر دیا ہے، بچے کی آنکھوں میں اترتے آنسو جگر کو پارہ پارہ کرتے ہیں ،جس کسی نے بھی یہ تصویر دیکھی ،بھارتی درند گی پر دل تھام
مزید پڑھیے


بُت شکن اُٹھ گئے باقی جو رہے بُت گر ہیں

جمعه 03 جولائی 2020ء
ارشاد احمد عارف
اقتدار سنبھالتے ہی قومی اقتصادی کونسل میں عاطف میاں کی شمولیت‘ چند ہفتے قبل قومی اقلیتی کمشن میں بلاوجہ قادیانی رکن کی نمائندگی اور اب اسلام آباد میں ہندوئوں کے مندر کی سرکاری خرچے پر تعمیر؟ریاست مدینہ کے علمبردار یہ کس راستے پر چل نکلے ۔ ؎ ہاتھ بے زور ہیں الحادسے دل خوگر ہیں اُمتی باعث رسوائی پیغمبرؐ ہیں بت شکن اُٹھ گئے‘ باقی جو رہے بُت گر ہیں تھا براہیم پدر اور پسر آزر ہیں بادہ اَشام نئے‘بادہ نیا‘ خُم بھی نئے حرمِ کعبہ نیا‘ بُت بھی نئے‘ تم بھی نئے پاکستان جدید طرز کی مسلم جمہوری ریاست ہے‘ جہاں اقلیتوں
مزید پڑھیے


فوادچودھری کے بیانات کی سماجی و سیاسی معنویت

جمعرات 02 جولائی 2020ء
احمد اعجاز
فواد چودھری کے وائس آف امریکا کو دیئے گئے انٹرویو کو پرنٹ ،الیکٹرانک اور سوشل میڈیا پر دو حوالوں سے زیربحث لایاگیا۔ایک حوالہ یہ تراشا گیا کہ فوادچودھری کو میڈیا میں اِن رہنے کا ہنر آتا ہے۔اس پہلو کی دلیل کے لیے اِن کے کیریئر پر نظر ڈالی گئی۔2018ء کے انتخابات کے بعد یہ وفاقی وزیر برائے اطلاعات رہے ،مگر یہ وزارت مختصر مُدت کیلئے رہی،اس وزارت کے دوران یہ مسلسل میڈیا میں اِن رہے۔جب وزارت اطلاعات لے کر سائنس و ٹیکنالوجی کی وزارت دی گئی تو یہ تاثر قائم کروایا گیا کہ اب فوادکی رُونمائی میڈیا پر زیادہ نہیں
مزید پڑھیے


جہانگیر ترین سے عمران خان تک!

جمعرات 02 جولائی 2020ء
ناصرخان
تاریخ پھر بھی مسکرائے گی جس طرح وہ آج ضیاء الحق، بھٹو، مشرف اور میاں نوازشریف پر مسکراتی ہے۔ ’’کچھ لوگ‘‘ جب بے نظیر سے اُکتا جاتے تو میاں صاحب آجاتے۔ میاں صاحب ڈکٹیشن لینے سے انکار کرتے تو بی بی لانگ مارچ کی دھمکی دے ڈالتیں۔ جب کوئی کہتا ہے کہ خان کا جانا ٹھہر گیا تو جواب آتا ہے ’’آپ کے پاس چوائس کوئی نہیں‘‘۔ ایک پنڈت جن کا رومانس سکرپٹ رائٹرز سے چلتا رہتا ہے۔ کہنے لگے ’’چوائس ہمیشہ موجود ہوتی ہے‘‘۔ ورنہ وہ خان کو ہیوی مینڈیٹ نہ دلادیتے۔ وہ کیا کسی شاعر نے کہا ہے
مزید پڑھیے


سیدعلی گیلانی کی حریت کانفرنس سے علیحدگی بڑانقصان؟

جمعرات 02 جولائی 2020ء
عبدالرفع رسول
29جون2020ء سوموارکوسوشل میڈیاکے ذریعے کشمیرکے91سالہ بزرگ قائد سیدعلی گیلانی کے دوصفحات پرمشتمل ایک خط اور 47 سکینڈکاایک مختصر آڈیوبیان سامنے آیاجس میں انہوں نے حریت کانفرنس سے اعلان برات کیا ہے۔ اگلے روزسری نگر کے تمام اخبارات نے یہ خبر اپنی شہ سرخیوں کے ساتھ شائع کی ۔تحریک کے اس نازک موڑ پرسیدعلی گیلانی کے حریت کانفرنس کو خیربادکہہ دینے نے عام کشمیری مسلمان کوورطہ حیرت میں ڈال دیا۔اس مفارقت کی کئی وجوہات ہوسکتی ہیں البتہ تحریکی حلقوں میں اسکی وجہ آزادکشمیرمیں حریت کانفرنس کے نمایندگان کے مابین چپقلش کو سمجھا جا رہا ہے۔ آزادکشمیرمیں حریت کانفرنس کی اہم اکائی
مزید پڑھیے


ٹیکس دے کر ہمیں ملتا کیا ہے ؟

جمعرات 02 جولائی 2020ء
اسداللہ خان
ذرا سوچیے آپ ایک دن میں کہاں کہاں ٹیکس دیتے ہیں۔ آپ صبح سو کر اٹھے، لائیٹ آن کی ، بجلی پہ ٹیکس ادا کیا، باتھ روم گئے ، نلکا کھولا تو پانی پہ ٹیکس ادا کیا، صابن استعمال کیا تو صابن پہ ٹیکس دیا، دانت صاف کیے تو برش اور ٹوتھ پیسٹ پر ٹیکس دیا، شیو بنائی تو ریزر ،شیونگ فوم اور آفٹر شیو لوشن پہ ٹیکس دیا۔ آفس جانے کے لیے جو کپڑے اور جوتے آپ نے پہنے اس پر 17 فیصد کے حساب سے سیلز ٹیکس آپ ادا کر چکے ہیں۔ ناشتے کی میز پر بیٹھے تو انڈے
مزید پڑھیے


دیوار سے آگے کیا ہے؟

جمعرات 02 جولائی 2020ء
سہیل اقبال بھٹی
بحرانوں سے دوچار وفاقی حکومت کیلئے ہمالیہ جیسے مسائل ٹلنے کا نام نہیں لے رہے۔عجب اتفاق ہے کہ وزیراعظم جس شعبے میں بہتری کیلئے کوشش شروع کرتے ہیں ‘بحران سنگین اور معاملات بے قابو ہوجاتے ہیں۔کورونا وائرس کی تباہ کاریوں کے نتیجے میں سسٹم میں کوتاہوں اور غلطیوں کو برداشت کرنے کی بریدنگ سپیس ختم ہوچکی ہے۔نیب مقدمات کا سامنا کرنے والی اپوزیشن ‘حکومت کے گرد گھیرا تنگ کرنے میں پیش قدمی کررہی ہے تو ایڈہاک ازم‘ـاقربا پروری اورغلط منصوبہ بندی کے باعث نئے بحران سراٹھار ہے ہیں۔ معاشی سست روی اور تنگدستی کا سامنا کرنے والے عوام کیلئے آنے
مزید پڑھیے





کالم نگار

اداریہ
اداریہ





سجاد میر
شہر آشوب




مجاہد بریلوی
شہر ناپرساں

مبشر لقمان
کھرا سچ

عبداللہ طارق سہیل
وغیرہ وغیرہ



افتخار گیلانی
مکتوب دہلی

خاور نعیم ہاشمی
پردہ اٹھتا ہے

رضا رومی
رومی نامہ




سعید خا ور
حر ف درما ں


راوٗ خالد
رولا رپہ



اشرف شریف
شہر نامہ





ارشاد محمود
بات یہ ہے

عا بد قر یشی
تجا ہل عا دلا نہ

اثر چوہان
سیا ست نامہ




ناصرخان
فرنٹ لائن

عدنان عادل
امروزوفردا

عابد قریشی
تجاہل عادلانہ

ذوالفقار چودھری
تیسری آنکھ


شاہین صہبائی
چلتے چلتے


سعید خاور
حرفِ درماں


مظفر بخاری
گستاخی معاف

یوسف سراج
نقش قدم


عمر قاضی
لالہ صحرائ

عبدالرفع رسول
مکتوب سری نگر

احمد اعجاز
دروا‍‌زہ

خالد ایچ لودھی
دل کی باتیں

وسی بابا
باتاں


محمد عامر رانا
اقلیم در اقلیم