کالم



آج کے کالم 


  


کالم آرکیو



متحدہ قومی موومنٹ کی سیاسی الجھنیں…( 2)

اتوار 26 جنوری 2020ء
سعید خا ور
ڈاکٹر مقبول صدیقی کے ڈرامائی استعفے کی طرف لوٹنے سے پہلے اب ذرا پاکستان کی سیاسی پارٹیوں کے لئے ہمیشہ قربانی کا بکرا بننے والے رائے دہندگان کی حرماں نصیبی کا بھی ذکر ہو جائے۔ پاکستان ہی نہیں جنوبی ایشیا کے تمام ترقی پذیر نما غریب اور حریص ملکوں میں غریبوں کا، وہ چاہے شہری ہوں یا دیہی ہر چنائومیں شوق دیدنی ہوتا ہے۔ہر برہنہ تن، برہنہ پا، بھوکا پیاسا انسان ہر چنائو میں یوں پر جوش ہوتا ہے کہ جیسے وہ ان انتخابات میں خود ہی امیدوار ہو۔بے چارے غریب اور سیاسی چالبازیوں سے ناآشنا پاکستانی کا یہ کردار
مزید پڑھیے


بدین سے گیس نیشنل ٹرانسمیشن میں شامل نہ ہونے کا معاملہ

اتوار 26 جنوری 2020ء
اداریہ
نیب نے بدین فور سائوتھ ویل سے 3کروڑ کیوبک فٹ یومیہ گیس کی نیشنل ٹرانسمیشن میں شامل ہونے میں رکاوٹ اور قومی خزانے کو ناقابل تلافی نقصان پہنچانے کے معاملے کی انکوائری شروع کر دی ہے۔ عوام گیس کے شدید بحران سے دوچار ہیں۔ حکومت ملکی ضروریات پوری کرنے کے لئے قطر سے مہنگے داموں ایل این جی خرید رہی ہے۔ وزیر اعظم غیر ملکی سرمایہ کاروں کو پاکستان میں سرمایہ کاری پر آمادہ کرنے کے لئے دن رات ایک کئے ہوئے ہیں۔ ماضی میں بھی یہ شکایات عام رہی ہیں کہ غیر ملکی سرمایہ کار بیورو کریسی کی غیر
مزید پڑھیے


چین سے کرونا وائرس پاکستان منتقل ہونے کا خدشہ

اتوار 26 جنوری 2020ء
اداریہ
حکومت نے چین سے کرونا وائرس پاکستان منتقل ہونے کے خدشے کے پیش نظر چائینہ سدرن ایئر لائن کی پاکستان میں پروازیں عارضی طور پر بند کر دی ہیں۔ چین میں کرونا وائرس کی وبا تشویشناک صورت حال اختیار کر چکی ہے ۔صوبہ ووہاں کے حکام نے خدشہ ظاہر کیا ہے کہ اس جان لیوا وائرس سے تین لاکھ افراد متاثر ہو سکتے ہیں۔ ان حالات میں چین میں موجود پاکستانیوں کے لواحقین شدید کرب میں مبتلا ہیں۔ دفتر خارجہ کے جاری کردہ اعداد و شمار کے مطابق چین میں 28ہزار پاکستانی طلبہ زیر تعلیم ہیںچین کا صوبہ ووہاں جو
مزید پڑھیے


پاکستان میں سکیورٹی کی بہتر صورتحال کا اعتراف

اتوار 26 جنوری 2020ء
اداریہ
برطانیہ نے پاکستان میں امن و امان کی صورتحال میں بہتری کو تسلیم کرتے ہوئے اپنے شہریوں کے لئے نئی سفری ہدایات جاری کی ہیں۔ برطانیہ نے اپنے شہریوں کو کہا ہے کہ وہ پاکستان کے خوبصورت سیاحتی مقامات سے لطف اندوز ہو سکتے ہیں۔ برطانوی ہائی کمشنر ڈاکٹر کرسچین ٹرنر کے مطابق انہوں نے دسمبر 2019ء میں اپنی ذمہ داریاں سنبھالنے کے بعد پاکستان میں برطانوی شہریوں کی حفاظت اور عمومی نقل و حرکت کے حوالے سے معاملات کا تجزیہ کیا۔ برطانیہ نے امن و امان کی صورت حال میں بہتری کے لئے حکومت پاکستان کی کوششوں کو سراہا
مزید پڑھیے


’’بھارت کو یوم جمہوریہ مبارک‘‘

اتوار 26 جنوری 2020ء
احسان الرحمٰن
میں نے سیل فون کے کیمرے سے تصویر بنانی چاہی تو ساتھ بیٹھے دوست نے پہلو میں کہنی سے ٹہوکا دیتے ہوئے آنکھوں کے اشارے سے منع کر دیا میں حیران ہو گیا کہ آخر یہ کون سی ایسی میٹنگ ہے کہ جس میں تصویربنانے کی اجازت بھی نہیں او ر وہ بھی کراچی پریس کلب میں ، میں نے دیکھا کہ وہاں سب کے فون جیبوں میں تھے میںنے بھی اپنا سیل فون جیب میں ڈال لیا او ر سامنے بیٹھی بزرگ شخصیت کی جانب متوجہ ہو گیا،گندمی باریش چہرہ اور سر پر ٹوپی ،یہ جماعت اسلامی ہند کے
مزید پڑھیے


فقط کچھ دوست ہیں اور دوست بھی کیا!!!

اتوار 26 جنوری 2020ء
ذوالفقار چودھری
امریکی مفکر میکس ویل نے کہا ہے کہ جب طوفان آتا ہے تو یاسیت پسند تباہی کا رونا رونا شروع کر دیتے ہیںاور خوش فہم طوفانوں سے بہتری کی امید باندھ لیتے ہیں جبکہ لیڈر آندھی کا رخ دیکھ کر بادبانوں کی سمت درست کرتے ہیں تاکہ تباہی پھیلانے والی تیز ہوائوں کو اپنی منزل کی جانب بڑھنے کے لئے معاون بنایا جا سکے۔شہر اقتدار آج کل افواہوں کے طوفان کی زد میں ہے۔ ہر کوئی اپنے اپنے علم اور فہم کے مطابق تبدیلی سرکار کی تبدیلی کے وقت اور حکمت عملی کے بارے میں قیاس آرائی کر رہا ہے۔
مزید پڑھیے


تحریک آزادی کا مرکز

اتوار 26 جنوری 2020ء
ظہور دھریجہ
تحریک آزادی کی تاریخ نئے سرے سے مرتب کرنے کی ضرورت ہے کہ سرکاری اور درباری تاریخ نویسوں نے تاریخ کے نام پر تاریخی گھپلے کیے ہیں ،ہمارے شہر خان پور کوتاریخ آزادی میں نمایاں مقام حاصل ہے مگر تاریخ کی کسی کتاب یا نصاب میں اس کا تذکرہ نہیں ہے۔خان پور کو تحریک آزادی کا مرکز ہونے کے اعزاز کے ساتھ یہ بھی اعزاز حاصل ہے کہ یہاں سے سب سے پہلے سرائیکی وسیب کے حقوق کی تحریک شروع ہوئی اور یہاں کے ایک سپوت ریاض ہاشمی مرحوم نے بہاول پور صوبے کیلئے بہت کام کیا اور بعد ازاں
مزید پڑھیے


روہنگیا مسلمانوں کی نسل کشی پرعالمی عدالت کانوٹس

اتوار 26 جنوری 2020ء
عبدالرفع رسول
عدل،انصاف اور مساوات کوبنیادی اصولوں تسلیم کئے بغیر انسانیت کی تعمیرممکن نہیں۔سرمائے، مذہب،رنگ، نسل اور جنسی تفریق کی بنیاد پر کھڑی دنیا میں جس طرح اقلیتوں کودبایاجارہاہے،مختلف بہانے تراش کرانہیں موت کے گھاٹ اتاراجارہاہے ،بچ جانے والوں کا استحصال کیاجارہا،ان کے ساتھ ظلم ، ناانصافی اور تشدد کیاجارہاہے ۔انسانی حقوق کے لئے آواز غداری قرار پا رہی ہے۔ مذہب،رنگ و نسل اور جنس کی بنیاد پر تفریق کی دیوار قائم ہے۔یہ اکیسویں صدی کے ماتھے پربہت بڑے دھبے ہیں جس کے باعث انسانی تاریخ کاہرورق اورہرباب آلودہ ہے۔کرہ ارض کے شرق وغرب میں جوجنگل راج نافذہے اس سے صاف دکھائی
مزید پڑھیے


یقین سے خالی زندگی

اتوار 26 جنوری 2020ء
احمد اعجاز
ایک دُھند ہے بے یقینی کی جو سماج پر تہہ دَر تہہ چھائی ہے۔لمحہ ٔ موجود تک بے یقین ٹھہرے تو آنے والے لمحے کا بھروسہ چہ معنی؟ہر کام کی ابتدابے یقینی کی دستک سے ہوتو کام تکمیل تک کیسے پہنچے؟بے یقین بستیوں کے مکینوں کی زندگیاں تک بے یقین ہو چکی ہیں ،معلوم ہی نہیںپڑتا کہ کون کس وقت مارا جاتا ہے۔یہ جو بے یقینی ہے ،یہی دَرحقیقت مصیبت ہے ،مگر یہ مصیبت ہے ،کوئی مانتا ہی نہیں۔یہ محض مصیبت ہی نہیں ،مصیبتوں کی ماں ہے۔بے زاری اور فراریت ،اس کی سگی بیٹیاں ہیں۔بے زاری اور فراریت آدمی سے
مزید پڑھیے


کیا تصوف کو نصاب کا حصہ ہونا چاہیے؟

اتوار 26 جنوری 2020ء
محمد عامر خاکوانی
وزیراعظم عمران خان نے چند دن پہلے یہ بیان دیا کہ تصوف کا نصاب کا حصہ بنانا چاہیے۔ ویسے تووزیراعظم کی سطح کی شخصیت ’’چاہیے ‘‘والا بیان دینے کے بجائے ہمیں صرف یہ بتائے کہ وہ ایسا کر رہے ہیں۔یہ ہونا چاہیے، وہ ہونا چاہیے وغیرہ کی خواہشات تو ہم عام لوگ کرتے ہیں۔ وزیراعظم فیصلہ ساز ہیں،وہ تو فیصلہ کر کے اس پر عملدرآمد کرائیں۔ خیر تصوف کو تعلیمی نصاب کا حصہ بنانے اور الگ سے کسی ادارے میں اس کی اعلیٰ تعلیم کی بات پر ہمارے ہاں سنجیدہ بحث ہونی چاہیے تھی۔ اس کے بجائے یہ اہم تجویز
مزید پڑھیے


گیدڑ کاٹ نہ لے

اتوار 26 جنوری 2020ء
ارشاد احمد عارف
اپوزیشن کی خود اعتمادی اور مسلم لیگ(ن) کی ابلاغی مہم کی سطح وہ تو نہیں جو اکتوبر کے دھرنا سے قبل مولانا فضل الرحمن اور ان کے ساتھیوں کی تھی مگر یہ تاثر بہرحال پختہ ہو رہا ہے کہ وفاق نہ سہی‘ پنجاب کی حد تک سب اچھا نہیں‘ تحریک انصاف کے اتحادی مضطرب ہیں اور ارکان اسمبلی کنفیوزڈ۔ کسی کو کچھ سمجھ نہیں آ رہا کہ فروری مارچ میں کیا ہونے والا ہے؟ کچھ ہو گا بھی یا مولانا کے دھرنے کی طرح اپوزیشن بالخصوص مسلم لیگ(ن) کا غنچہ فصل گل کے آتے آتے‘ بن کھلے مر جا جائیگا؟
مزید پڑھیے


ژوب: سول ہسپتال میں تسلی بخش اقدامات کے اعتراف میں

هفته 25 جنوری 2020ء
محمد حسین ہنز ل
ہم لوگ کسی کام چور ڈاکٹر، کرپٹ آفیسر یا نااہل ایجوکیشنسٹ کی کمزوریاں پکڑنے میں خوب مہارت رکھتے ہیں لیکن جب ایک اہل اور مخلص بندے کی ہزار خوبیاں بھی ہم پر منکشف ہوجاتی ہیں تواس کی دلجوئی اورتعریف کیلئے ہمارے پاس دوالفاظ بھی نہیں ہوتے ۔خدانہ کرے کہ ایک دن کام والے بندے بھی ہم سے روٹھ جائیں گے ۔ ژوب سول ہسپتال میں چند روز پہلے جانا ہوا تو ماضی کی نسبت یہاں پرکافی بہتری اور تسلی بخش تبدیلی ملی،یاد رہے کہ ژوب سول ہسپتال(ڈی ایچ کیو) اس علاقے کا وہ واحد ہسپتال ہے جس سے نہ صرف
مزید پڑھیے


وہ جو ہو رہا ہے

هفته 25 جنوری 2020ء
سعد الله شاہ
لوٹ مار اور چور بازاری اور کسے کہتے ہیں! گیس کا بل میرے سامنے ہے۔ توبہ توبہ 7000سات ہزار روپے کا بل اتنا تو سالانہ بل بھی نہیں ہوتا تھا۔ میں کافی دیر تک اسے گھورتا رہا۔900روپے اس میں سیل چارجز ہیں، بقایا جات میں 400روپے دیکھ کر حیرت کیوں نہ ہو کہ پچھلے ماہ تو پورا بل ادا کیا تو پھر یہ بقایا جات کہاں سے آ گئے۔ سوشل میڈیا پر پی ٹی وی فیس اچانک 34روپے سے بڑھا کر 100روپے کرنے کا رونا رویا جا رہا ہے: اک بات کا رونا ہو تو رو کر صبر آئے ہر بات پہ
مزید پڑھیے


شاہین باغ دہلی میں خواتین کا احتجاجی دھرنا

هفته 25 جنوری 2020ء
عبدالرفع رسول
آج جب یہ کاکالم ہمارے قارئین کی نظروں سے گذررہاہے تو شاہین باغ میں خواتین کے اس احتجاج کو43روز ہورہے ہیں۔14دسمبر 2019ء کی دوپہر کو 10تا 15علاقائی خواتین نے دریائے جمنا کے کنارے واقع شاہین باغ جس کا محل وقوع کالندی کنج شاہین باغ نامی شاہراہ عام ہے جو دھرنے کے باعث 15دسمبر سے بند ہے ۔دھرنے میں خواتین جوق درجوق اس دھرنامیںشامل ہوتی چلی گئیں۔ اس طرح یہ 24/7احتجاج بن گیا ہے۔ دہلی میں ریکارڈ کی جانے والی سوسالوں میں پہلی بارپڑنے والی شدید سردی اوربارش بھی ان کا حوصلہ پست نہیں کرسکی ۔اب روزانہ کی بنیادپریہاں لاکھوں کا
مزید پڑھیے


انہیں گراں فروشی کی اجازت ہے کیا؟

هفته 25 جنوری 2020ء
اسداللہ خان
آٹا مہنگا ہونے پر پریشان مت ہوئیے صاحب!چھوٹی دکان سے خریدتے ہوئے آپ کو تکلیف ہو رہی ہے تو بڑے سٹور سے خرید لیجئے، مہنگا اور ناقص آٹا خرید کر بھی آپ کی تسلی رہے گی۔ہوتا یوں ہے کہ حکومت ایک نام نہاد سرکاری ریٹ لسٹ جاری کرتی ہے۔گوشت ، انڈے ، چینی، چاول ، دالیں ، سبزیاں اور پھل، سب کے نرخ مقرر کیے جاتے ہیں۔پھراس ریٹ لسٹ کا اطلاق کرانے کے لیے پرائس کنٹرول کمیٹیاں گلی محلوں میں گشت شروع کرتی ہیں ۔مجموعی طورپر توچھوٹے اور غریب دکاندار اس سرکاری حکم نامے کی پابندی کر ہی رہے ہوتے
مزید پڑھیے






کالم نگار

اداریہ
اداریہ









سجاد میر
شہر آشوب

مستنصر حسین تارڑ
ہزار داستان

مجاہد بریلوی
شہر ناپرساں


مبشر لقمان
کھرا سچ

عبداللہ طارق سہیل
وغیرہ وغیرہ


بشریٰ رحمان
چادر چاردیواری اور چاندنی

نو شی گیلا نی
کا لم کہا نی


افتخار گیلانی
مکتوب دہلی

خاور نعیم ہاشمی
پردہ اٹھتا ہے


رضا رومی
رومی نامہ

انجم نیاز
یادداشت از امریکا



خاور گھمن
گھمن گھیریاں


سعید خا ور
حر ف درما ں


راوٗ خالد
رولا رپہ



اشرف شریف
شہر نامہ

ایچ اقبال
ایچ اقبال


قدسیہ ممتاز
حرف تازہ





سعود عثمانی
دل سے دل تک

اثر چوہان
سیاست نامہ

عامر متین
عامر متین

ارشاد محمود
بات یہ ہے

عا بد قر یشی
تجا ہل عا دلا نہ


ناصرخان
فرنٹ لائن

عدنان عادل
امروزوفردا

ذوالفقار چودھری
تیسری آنکھ

شاہین صہبائی
چلتے چلتے



سعید خاور
حرفِ درماں


مظفر بخاری
گستاخی معاف

رعایت اللہ فاروقی
گفتار و پندار

یوسف سراج
نقش قدم


عمر قاضی
لالہ صحرائ

عبدالرفع رسول
مکتوب سری نگر

احمد اعجاز
دروا‍‌زہ

خالد ایچ لودھی
دل کی باتیں

رحمت علی رازی
درون پردہ

وسی بابا
باتاں


راحیل اظہر
غبارِخاطر

محمد عامر رانا
اقلیم در اقلیم